اسرائیل کی غزہ پر جارحیت جاری رکھنے کی دھمکی

جنوبی اسرائیل میں امن کے قیام تک حملے جاری رہیں گے:نیتن یاہو

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

اسرائیلی وزیراعظم بنجمن نیتن یاہو نے صہیونی ریاست کے جنوبی علاقے میں امن کے قیام تک غزہ کی پٹی فوجی حملے جاری رکھنے کی دھمکی دی ہے۔

صہیونی وزیراعظم نے اتوار کو اپنی کابینہ کے اجلاس میں کہا ہے کہ ''آپریشن دفاعی کنارہ اپنے مقاصد کے حصول تک جاری رہے گا''۔وہ جنوبی اسرائیل کی جانب سے غزہ کی پٹی سے فلسطینی مزاحمت کاروں کے راکٹ حملوں کا حوالہ دے رہے تھے۔

اسرائیلی فوج 8 جولائی سے غزہ کی پٹی پر آپریشن دفاعی کنارہ کے نام سے زمینی اور فضائی حملے کررہی ہے۔اس نے مسلح فلسطینی مزاحمت کاروں کے خلاف یہ حملے شروع کیے تھے لیکن عام نہتے فلسطینی اسرائیلی جنگی طیاروں کی وحشیانہ بمباری کا نشانہ بن رہے ہیں اور ان میں اب تک دو ہزار ایک سو سے زیادہ فلسطینی شہید اور گیارہ ہزار سے زیادہ زخمی ہوچکے ہیں۔

قبل ازیں اتوار کو اسرائیلی جنگی طیاروں نے غزہ کی پٹی کے جنوبی قصبے رفح میں تباہ کن بمباری کرکے ایک سات منزلہ عمارت اور ایک دو منزلہ کمرشل عمارت کو ملبے کا ڈھیر بنا دیا ہے۔اول الذکر عمارت میں حماس کے زیراہتمام وزارت داخلہ کے دفاتر قائم تھے اور موخرالذکر عمارت کے زیریں حصے میں درجنوں دکانیں تھیں۔حملے میں سات افراد زخمی ہوئے ہیں۔

اسرائیلی فضائیہ نے غزہ شہر میں بھی ایک بارہ منزلہ اپارٹمنٹ ٹاور کو بھی بمباری کرکے تباہ کردیا ہے۔اسرائیل نے دعویٰ کیا ہے کہ اس عمارت میں حماس کا ایک آپریشن روم قائم تھا۔ہفتے کے روز غزہ کے وسطی علاقے میں صہیونی فوج کے فضائی حملے میں ایک ہی خاندان کے پانچ افراد شہید ہوگئے تھے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں

  • مطالعہ موڈ چلائیں
    100% Font Size