فلسطینی مزاحمت کار فاتح بن کر اُبھرے ہیں: ایران

دلیرحماس نے صہیونی اسرائیل کو گھٹنے ٹیکنے پر مجبور کردیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

ایران نے کہا ہے کہ فلسطینی مزاحمت کار اسرائیل کے ساتھ پچاس روزہ جنگ میں فاتح بن کر ابھرے ہیں اور انھوں نے دشمن اسرائیل کو گھٹنے ٹیکنے پر مجبور کردیا ہے۔

ایرانی وزارت خارجہ نے بدھ کو جاری کردہ ایک بیان میں کہا ہے کہ ''دلیر فلسطینی عوام نے مزاحمت کی فتح کی ایک نئی تاریخ رقم کی ہے اور صہیونی رجیم کو گھٹنوں کے بل جھکنے پر مجبور کردیا ہے''۔

بیان میں فلسطینی عوام اور غزہ کے مزاحمتی گروپوں کو مبارک باد دی گئی ہے اور کہا گیا ہے کہ اس فتح سے بیت المقدس سمیت تمام مقبوضہ سرزمین کی حتمی آزادی کی راہ ہموار ہوگی۔

مصر کی ثالثی کے نتیجے میں اسرائیل اور حماس کے درمیان غزہ کی پٹی میں منگل کی شام جنگ بند ہوئی تھی۔ جنگ بندی کا اعلان ہوتے ہی غزہ کے مکین سڑکوں پر نکل آئے اور انھوں نے اپنی فتح کا جشن منانا شروع کردیا۔ فلسطینی اسے اپنی فتح گردان رہے ہیں حالانکہ ان کا زیادہ جانی نقصان ہوا ہے اور غزہ شہر اور دوسرے قصبوں میں سیکڑوں عمارتیں ملبے کا ڈھیر بن گئی ہیں۔

فلسطینی حکام کے مطابق غزہ کی پٹی میں 8 جولائی کو اسرائیلی فوج کی جارحیت کے آغاز کے بعد سے 26 اگست تک دو ہزار ایک سو تینتالیس فلسطینی شہید اور قریباً بارہ ہزار زخمی ہوئے ہیں۔شہداء میں قریباً پانچ سو کم سن بچے شامل ہیں۔

اقوام متحدہ کے فراہم کردہ اعدادوشمار کے مطابق فلسطینی شہداء اور مجروحین میں ستر فی صد عام شہری ہیں۔ فلسطینی مزاحمت کاروں کے ساتھ دوبدو لڑائی یا ان کے راکٹ حملوں میں چونسٹھ صہیونی فوجی اور چھے عام یہودی ہلاک ہوئے ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں