.

عرب لیگ کا داعش سے نمٹنے کے لیے اقدامات پراتفاق

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

عرب لیگ کے وزرائے خارجہ نے سخت گیر جنگجو گروپ دولت اسلامی عراق وشام (داعش) کی بیخ کنی کے لیے تمام ضروری اقدامات اور اس ضمن میں بین الاقوامی ،علاقائی اور قومی کوششوں کے ساتھ تعاون سے اتفاق کیا ہے۔

عرب وزرائے خارجہ نے اتوار کو قاہرہ میں اجلاس کے بعد ایک اعلامیہ جاری کیا ہے جس میں اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کی گذشتہ ماہ منظور کردہ قرارداد کی توثیق کی گئی ہے۔اس قرارداد میں رکن ممالک پر زوردیا گیا تھا کہ وہ عراق اور شام میں لڑنے والے انتہا پسندوں کی لاجسٹیکل ،عسکری اور مالیاتی امداد کو روکنے کے لیے اقدامات کریں۔

قبل ازیں عرب لیگ کے سیکریٹری جنرل نبیل العربی نے دولت اسلامی عراق وشام اور دوسرے جہادی گروپوں کے جنگجوؤں سے نمٹنے کے لیے جامع عسکری اور سیاسی اقدامات کی ضرورت پر زور دیا ہے۔

انھوں نے عرب لیگ کے وزرائے خارجہ کے اجلاس کے موقع پر کہا ہے کہ ''داعش سے فوجی اور سیاسی طور پر جامع انداز میں نبردآزما ہونے کے لیے ایک واضح فیصلے کی ضرورت ہے''۔ڈاکٹر نبیل العربی نے گذشتہ روز امریکی وزیر خارجہ جان کیری سے ملاقات کی تھی اور ان سے داعش کے خطرے سے نمٹنے سے متعلق امور پر تبادلہ خیال کیا تھا۔

عرب لیگ کے ایک سفارت کار کے مطابق وزرائے خارجہ نے داعش کی بیخ کنی کے لیے قرار داد پر غور کیا ہے۔اب اس قرارداد کی منظوری کے بعد عرب ممالک اس دہشت گرد تنظیم سے نمٹنے کے لیے امریکا کے ساتھ تعاون کریں گے۔

ادھر عراق نے امریکی صدر براک اوباما کے داعش کے جنگجوؤں کے خلاف بین الاقوامی اتحاد کے قیام کے منصوبے کا خیرمقدم کیا ہے۔امریکی صدر نے گذشتہ جمعہ کو نیٹو کے سربراہ اجلاس میں عراق اور شام میں برسرپیکار سخت گیر جنگجو گروپ دولت اسلامی کے استیصال کے لیے ایک وسیع تر بین الاقوامی اتحاد کی تشکیل کے لیے اپنا منصوبہ پیش کیا تھا۔

انھوں نے کہا تھا کہ اس جنگجو گروپ کو شکست دی جائے گی اور اس کے جنگجوؤں کا القاعدہ کے ارکان کی طرح پیچھا کیا جائے گا۔انھوں نے نیو پورٹ ،ویلز میں معاہدہ شمالی اوقیانوس کی تنظیم نیٹو کے سربراہ اجلاس کے موقع پر نیوز کانفرنس میں کہا:''مجھے پورا اعتماد ہے،نیٹو اتحادی اور اس کے شراکت دار ایک وسیع تر بین الاقوامی اتحاد میں شمولیت اختیار کرنے کو تیار ہیں''۔

انھوں نے کہا کہ ان کے اس اتحاد کا مقصد داعش کو ختم کرنا ہے اور امریکی وزیرخارجہ جان کیری مشرق وسطیٰ کا دورہ کریں گے تاکہ علاقائی قوتوں کو بھی اس اتحاد میں شامل کیا جا سکے۔ان کے اس منصوبے کےتحت جان کیری نے ہفتے کے روز مصر کا دورہ کیا ہے۔امریکی صدر 11 ستمبر کو نائن الیون حملوں کی برسی کے موقع پر داعش کے خلاف اس نئے بین الاقوامی اتحاد کا اعلان کرنے والے ہیں۔