.

داعش کے خلاف عراقی حکومت کی مدد کریں گے: اوباما

انتہا پسندی کے خلاف وسیع البنیاد اتحاد، کیری مشرق وسطی پہنچیں گے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

امریکی صدر اوباما نے فون پر عراقی وزیر اعظم حیدر العبادی سے بات کرتے ہوئے انہیں یقین دلایا ہے کہ امریکا داعش کے خلاف نئی عراقی حکومت کی مدد کرتا رہے گا۔

وائٹ ہاوس کیطرف سے جاری کردہ ایک بیان میں کہا گیا ہے کہ صدر اوباما اور عراقی وزیر اعظم نے فون پر بات چیت کے دوران اس امر پر اتفاق کیا ہے کہ نئی حکومت کو کردوں کے تحفظات اور جائز شکایات کے ازالے کے لیے فوری طور پر ٹھوس اقدامات کرنا ہوں گے۔

اس موقع پر عراقی وزیر اعظم حیدر العبادی نے تمام عراقی طبقات کے ساتھ مل کر کام کرنے کے عزم کا اظہار کیا۔ نیز علاقائی اور بین الاقوامی شراکت کاروں کے ساتھ مل کر عراق کی دہشت گردوں سے نمٹنے کے صلاحیت کو موثر بنانے کا اعلان کیا۔

دوسری جانب امریکی وزیر خارجہ جان کیری نے عراق میں نئی حکومت کی تشکیل کو سراہا ہے۔ جان کیری نے دفتر خارجہ میں رپورٹرز سے گفتگو کرتے ہوئے کہا '' نئی عراقی حکومت کی تشکیل فرقہ وارانہ اور نسلی تقسیم سے نمٹنے کے لیے ایک سنگ میل ثابت ہو گی۔ ''

جان کیری نے ایک سوال کے جواب میں کہا وہ آج منگل کے روز سے مشرق وسطی کے دورے پر جا رہے ہیں تاکہ داعش کو شکست دینے کے لیے ایک وسیع البنیاد عالمی اتحاد کی تشکیل میں پیش رفت ہو سکے۔

واضح رہے عراق میں حیدر العبادی کی زیر قیادت قائم ہونے والی نئی حکومت کے بعد جان کیری کا خطے کا یہ پہلا دورہ ہو گا۔

حیدرالعبادی نے اپنی کابینہ میں شیعہ اکثریت کے نمائندوں کو لینے کے علاوہ، کردوں اور سنی اقلیت کے نمائندوں کو بھی شامل کیا ہے۔ نئی کابینہ کے سامنے سب سے بڑا چیلنج عراقی وحدت کو درپیش خطرات اوردہشت گردی سے نمٹنا ہو گا۔