شامی سرحد کے قریب دھماکا، دو لبنانی فوجی ہلاک

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

شام کی سرحد سے متصل عرسال قبصے میں ایک بارودی سرنگ کے دھماکے میں دو لبنانی فوجی ہلاک اور تین زخمی ہو گئے۔

خبر رساں اداروں کی رپورٹس کے مطابق لبنانی فوج کی جانب سے جاری ایک بیان میں بتایا گیا ہے کہ عرسال قصبے میں ایک فوجی ٹرک کو ریمورٹ کنٹرول دھماکے سے نشانہ بنایا گیا دھماکے کے بعد راکٹ لانچر سے چلنے والے گرینیڈز بھی پھینکے گئے جس کی زد میں آ کر دو فوجی ہلاک اور تین زخمی ہوئے ہیں۔

واقعے کے فوری بعد سیکیورٹی فورسزنے علاقے کو گھیرے میں لے کر سرچ آپریشن شروع کر دیا تھا۔ پولیس نے واقعے کی تحقیقات بھی شروع کر دی ہیں تاہم اس ضمن میں کسی شخص کی گرفتاری کی اطلاعات نہیں ملیں اور نہ ہی کسی گروپ نے اس کارروائی کی ذمہ داری قبول کی ہے۔

فوج کے ایک ذریعے نے خبر رساں ایجنسی"رائیٹرز" کو بتایا کہ فوجی ٹرک پر حملے سے قبل عرسال اور اس کے مضافات میں عسکریت پسندوں کے ٹھکانوں پر گولہ باری کی گئی تھی جس میں بھاری ہتھیاروں کا استعمال کیا گیا۔

عسکری ذریعے نے بتایا کہ جمعہ کو علی الصباح وادی بقاع کے علاقے بعلبک سے دو شامی باشندوں کو پکڑا گیا ہے جنہوں نے القاعدہ کی ذیلی تنظیم النصرہ فرنٹ سے اپنے تعلق کی تصدیق کی ہے۔ اس گرفتاری سے کچھ دیر قبل النبطیہ کے مقام سے بھی چھ شامی باشندوں کو حراست میں لیا گیا تھا۔ سیکیورٹی حکام کے مطابق انہوں نے بھی ایک دہشت گرد تنظیم سے اپنے تعلق کا اعتراف کیا ہے۔ دونوں گروپوں کے قبضے سے اسلحہ اور گولہ بارود بھی پکڑا گیا ہے۔

یاد رہے کہ شام کی سرحد سے متصل عرسال قصبہ پچھلے کچھ عرصے سے کشیدگی کا شکار ہے۔ جولائی میں النصرہ فرنٹ اور دولت اسلامی عراق وشام"داعش" کے جنگجوؤں نے اس قصبے میں کارروائی کر کے کئی لبنانی فوجیوں کو یرغمال بنا لیا تھا۔ عسکریت پسندوں اور لبانی فوج کے درمیان اگست میں بھی اس علاقے میں مسلسل پانچ روز تک جھڑپیں ہوتی رہی ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں