.

اسرائیلی فوج اخلاقی اعتبار سے بہترین ہے: نیتن یاہو

اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی میں محمود عباس کی تقریر کا توڑ کروں گا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

اسرائیلی وزیر اعظم بنجمن نیتن یاہو نے کہا ہے کہ وہ اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی کے اجلاس سے اپنے خطاب میں غزہ کی پٹی میں حالیہ پچاس روزہ جنگ کے بارے میں بیان کیے گئے جھوٹ کا توڑ کریں گے کیوںکہ وہ سمجھتے ہیں کہ ان کے ملک کی فوج اخلاقی اعتبار سے دنیا کی بہترین فوج ہے۔

جنرل اسمبلی کے اجلاس میں شرکت کے لیے نیویارک روانہ ہونے سے پہلے رپورٹروں سے بات چیت کرتے ہوئے انہوں نے کہا '' میں اس جھوٹ کا توڑ کروں گا جو محمود عباس نے اپنی تقریر میں بیان کیا ہے۔'' واضح رہے کہ فلسطینی اتھارٹی کے صدر نے غزہ پر آٹھ جولائی سے مسلط کردہ جنگ کے دوران اسرائیل کو فلسطینیوں کی نسل کشی کا ذمہ دار قرار دیا تھا۔

نتن یاہو نے کہا '' میں جنرل اسمبلی میں اس جھوٹ کو رد کروں گا جو ہمارے بارے میں بولا گیا ہے۔میں محمود عباس اور ایرانی صدر کی تقریروں کے بعد دنیا کو اسرائیلی عوام کی طرف سے سچ بتاوں گا۔''

انتہاپسند اسرائِیلی وزیر خارجہ لائبرمین نے پہلے ہی محمود عباس کی تقریر پر غم وغصے کا اظہار کرتے ہوئے اس کو سفارتی دہشت گردی کا نام دیا تھا۔یاہو کی ٹیم کے ایک ذمہ دار نے محمود عباس کی جنرل اسمبلی میں تقریر کو نفرت انگیز اور جھوٹ سے بھری ہوئی قرار دیا ہے۔

واضح رہے اسرائیلی وزیر اعظم جنرل اسمبلی سے اپنے خطاب کے بعد واشنگٹن ڈی سی روانہ ہوں گے،جہاں ان کی امریکی صدر براک اوباما سے ملاقات متوقع ہے۔ وہ غزہ جنگ کے بعد عالمی برادری کا سامنا کریں گے۔ واضح رہے کہ غزہ جنگ میں 2100 سے زائد فلسطینی شہید ہوئے تھے۔