.

اتحادی طیاروں کی ترک سرحد کے نزدیک داعش پر بمباری

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

امریکا کی قیادت میں اتحادی فورسز نے ترکی کی سرحد کے نزدیک واقع شامی
علاقے میں دولت اسلامی (داعش) کے ٹھکانوں پر بدھ کو نئے فضائی حملے کیے
ہیں۔اس علاقے میں داعش کے جنگجوؤں نے گذشتہ دو ہفتے سے کرداکثریتی شہر
عین العرب (کوبانی) کا محاصرہ کررکھا ہے۔

داعش سے محاذآراء کردفورسز کے کمانڈر عصمت الشیخ نے ٹیلی فون کے ذریعے
بتایا ہے کہ اتحادی طیاروں نے کوبانی شہر کے نواح میں داعش کے جنگجوؤں
پر پانچ فضائی حملے کیے ہیں لیکن ابھی یہ غیرواضح ہے کہ وہ کامیاب بھی
رہے ہیں یا نہیں۔

برطانیہ میں قائم شامی آبزرویٹری برائے انسانی حقوق کے ڈائریکٹر رامی
عبدالرحمان کا کہنا ہے کہ میدان جنگ میں موجود کرد ذرائع نے فضائی حملوں
میں داعش کے بعض جنگجوؤں کی ہلاکت کی اطلاع دی ہے اور انھوں نے ان کی
لاشیں دیکھی ہیں۔

کوبانی میں موجود ایک کرد گروپ کے ساتھ مترجم کے طور پر کام کرنے والے
پرور محمد علی کا کہنا ہے کہ ''آج امریکی جیٹ طیاروں نے کوبانی سے
چارپانچ کلومیٹر جنوب مشرق میں واقع ایک گاؤں پر بمباری کی ہے جس کے
نتیجے میں داعش کا ایک ٹینک تباہ ہوگیا ہے''۔

واضح رہے کہ کوبانی کے نواح میں کرد جنگجوؤں اور داعش کے درمیان شدید
لڑائی ہورہی ہے۔امریکا اور اس کے اتحادیوں کے جنگی طیاروں نے حالیہ دنوں
میں کوبانی اور اس کے آس پاس کے علاقوں میں تباہ کن فضائی حملے کیے ہیں
لیکن وہ داعش کی پیش قدمی میں روکنے میں ناکام رہے ہیں۔البتہ اب ان کی
آزادانہ اور جتھوں کی شکل میں نقل وحرکت محدود ہوچکی ہے۔

کوبانی ترکی اور شام کے درمیان سرحد کے نزدیک واقع ہے۔ داعش نے اس شہر کی
جانب دوہفتے قبل پیش قدمی شروع کی تھی اور اب وہ اس سے صرف تین کلومیٹر
دوری پر ہیں۔ داعش کے جنگجو جنوب اور جنوب مشرق کی سمت سے پیش قدمی کررہے
ہیں۔گذشتہ دوہفتے کے دوران انھوں نے اس سے اردگرد واقع سڑسٹھ دیہات پر
قبضہ کر لیا ہے۔