.

ہالینڈ اور کینیڈا کی داعش مخاالف کارروائیوں پر آمادگی

ہالینڈ سے دوستی پر فخر ہے، امریکا کی طرف سے خیر مقدم

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

ہالینڈ اور کینیڈا بھی داعش کے خلاف عالمی اتحاد میں شامل ہونے کے لیے تیار ہو گئے ہیں۔ ہالینڈ کے وزیر اعظم سٹیفن ہارپر کو اس سلسلے میں اپنی پارلیمنٹ کی حمایت حاصل ہو گئی ہے۔

ڈچ پارلیمنٹ کی اس منظوری کے بعد ہالینڈ میں داعش کے ٹھکانے تباہ کرنے کی پوزیشن میں آ گیا ہے۔ جبکہ پیر کے روز کینیڈا کی پارلیمنٹ بھی ایسی ہی منظوری دینے کا ارادہ رکھتی ہے۔ منظوری ملنے سے کینیڈا 2011 میں لیبیا میں کارروائیوں کا حصہ بننے کے بعد داعش کے خلاف پہلی بار کارروائیوں کا حصہ بنے گا۔

ہالینڈ کے وزیر اعظم نے کہا پارلیمنٹ میں ان کی قدامت پسند جماعت کی اکثریت ہے، اب پارلیمنٹ سے چھ ماہ تک داعش کے خلاف کارروائیوں کے اختیار کے لیے ووٹ لیا جائے گا، تاکہ دہشت گردی کا مقابلہ کیا جا سکے۔

دوسری جانب امریکا نے اس پیش رفت کا خیر مقدم کیا ہے کہ اس ہفتے سے عراق میں داعش کے کے خلاف کارروائیوں میں ہالینڈ کے ایف سولہ طیارے بھی بروئے کار آ سکیں گے۔

واضح رہے ہالینڈ اس سے پہلے ہی اپنے چھ ایف سولہ طیاروں کو داعش کے خلاف حرکت میں لانے اور دو ایف سولہ طیاروں کو ریزرو میں رکھنے کا کہہ چکا ہے۔

تاہم ہالینڈ نے شام میں کارروائی نہ کرنے کا عندیہ دیا ہے۔ ہالینڈ کے فوجی ماہرین عراقی فوجیوں کی تربیت کا کام بھی کریں گے۔

وائٹ ہاوس نے اس فیصلے کو سراہتے ہوئے کہا ہے '' ہالینڈ کی پارلیمنٹ نے یہ فیصلہ کر کے عالمی امن کے لیے اپنی گہری وابستگی اور قائدانہ کردار کا اظہار کیا ہے، امریکا کو ہالینڈ اور اس کے عوام کے ساتھ پائیدار دوستی پر فخر ہے۔''