.

لبنانی سرحد پر دھماکا، تین اسرائیلی فوجی زخمی

حزب اللہ نے ذمے داری قبول کرلی،اسرائیلی فوج کی گولہ باری

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

اسرائیل اور لبنان کے درمیان واقع سرحد پر بم دھماکا ہوا ہے جس کے نتیجے میں تین اسرائیلی فوجی زخمی ہو گئے ہیں۔شیعہ ملیشیا حزب اللہ نے اس حملے کی ذمے داری قبول کر لی ہے۔اسرائیلی فوج نے اس واقعے کے ردعمل میں سرحد کے دوسری جانب توپ خانے سے گولہ باری کی ہے۔

حزب اللہ کے ملکیتی المنار ٹیلی ویژن نے سرحدی علاقے میں دھماکے کی آواز سنی جانے کی اطلاع دی ہے اور بتایا ہے کہ تنظیم نے اس دھماکے کی ذمے داری قبول کی ہے۔اس دھماکے کے بعد اسرائیلی فوج نے لبنان کے جنوبی گاؤں کفرشعوبہ کی جانب گولہ باری کی ہے۔اسرائیلی فوج کی خاتون ترجمان نے فوری طور پر اس واقعے پر کوئی تبصرہ نہیں کیا ہے۔

واضح رہے کہ اسرائیل اور لبنان کی سرحد پر وقفے وقفے سے تشدد کے واقعات رونما ہوتے رہتے ہیں۔قبل ازیں اسی مہینے کے اوائل میں اسرائیلی فوجیوں کی سرحدپار فائرنگ سے دو لبنانی فوجی زخمی ہوگئے تھے۔

اسرائیلی فوجیوں نے اتوار کے روز اسی علاقے میں دو افراد پر فائرنگ کردی تھی۔صہیونی فوج نے ایک بیان میں کہا ہے کہ ان دونوں افراد نے لبنان سے اسرائیلی علاقے میں داخل ہونے کی کوشش کی تھی لیکن انھیں واپس بھیج دیا گیا ہے۔

اسرائیل ٹیکنیکل طور پر لبنان اور شام کے ساتھ حالت جنگ میں ہے اور لبنان کی حزب اللہ 2006ء میں اسرائیلی فوج کے ساتھ چونتیس روز تک جنگ لڑ چکی ہے۔اب اس کے جنگجو شام میں صدر بشارالاسد کی وفادار فوج کے ساتھ مل کر باغی جنگجوؤں کے خلاف جنگ میں اُلجھے ہوئے ہیں اور وہ کوئی نیا محاذ کھولنے کی پوزیشن میں نہیں۔