.

مصری جامعات میں داخلے کے لیے نئے ضابطہ اخلاق کا اعلان

داخلے کے لیے سیکیورٹی کلیئرنس سرٹیفکیٹ پیش کرنا لازمی قرار

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

مصر کی جامعات میں نئے تعلیمی سال کا آغاز ہو گیا ہے۔ نو تعلیمی سال کے شروع ہی میں تمام بڑی جامعات نے طلباء و طالبات کے داخلے کے حوالے سے ایک نیا ضابطہ اخلاق جاری کیا ہے جس میں داخلے کے خواہش مند طلباء کے لیے سیکیورٹی کلیئرنس سرٹیفکیٹ پیش کرنا لازمی قرار دیا گیا ہے۔ اس سرٹیفکیٹ میں طلباء کو یہ بتانا ہو گا کہ وہ کسی قسم کے نشے کے عادی نہیں ہیں۔ منشیات استعمال نہیں کرتے اور تعلیمی کیریئر میں ان پر کوئی سیاسی یا فوجی نوعیت کا مقدمہ بھی قائم نہیں‌ کیا گیا۔ نیز طلباء وطالبات یونیورسٹی میں تدریسی عمل کے دوران "برمودا ٹراؤزر" اور ٹی شرٹ استعمال نہیں کریں گے۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ‌ کے مطابق جامعہ قاہرہ کی جانب سے بدھ کو جاری ایک سرکلر میں داخلے کے خواہش مند طلباء و طالبات کے لیے ضروری ہدایات پر مبنی ایک سرکلر جاری کیا گیا ہے جس میں داخلے کی شرائط بیان کی گئی ہیں۔ ضابطہ اخلاق میں‌ پہلی شرط یہ ہے کہ طلباء وطالبات داخلے کے وقت اپنا سیکیورٹی کلیرئنس سرٹیفکیٹ پیش کریں جس اس بات کی تصدیق کی گئی ہو کہ امیدوار کسی قسم کے مقدمہ میں‌ ملوث نہیں رہا۔ اس کے خلاف کوئی ایف آئی آر نہیں کاٹی گئی اور نہ وہ کسی فوج داری کیس میں پولیس کو مطلوب ہے۔ یہ سرٹیفکیٹ طلباء کو اپنے علاقے کی پولیس کی جانب سے فراہم کرنا ہو گا۔ داخلے کے لیے قومی شناختی کارڈ کی اصل کاپی دکھانا ضروری ہو گی اس کے ساتھ ایک میڈیکل سرٹیفکیٹ جس میں یہ تصدیق کی گئی ہو کہ امیدوار کسی قسم کے نشے کا عادی نہیں ہے۔

یونیورسٹی کی جانب سے جاری بیان میں بتایا گیا ہے کہ جامعہ کی ویب سائیٹ پر ایک فارم موجود ہے جسے پر کرنے کے بعد داخلے کے خواہش مند امیدوار جامعہ کی لیبارٹری سے اپنا میڈیکل ٹیسٹ کرا سکتے ہیں جس میں ان کے منشیات کے عدم استعمال کی تصدیق یا تردید ہو جائے گی۔

جامعہ القاہرہ کے چیئرمین ڈاکٹر جابر نصار نے میڈیا کو بتایا کہ ضابطہ اخلاق کا اطلاق تمام طلباء وطلبات پر یکساں ہو گا اور کسی امیدوار کو اس سلسلے میں کوئی رعایت نہیں دی جائے گی۔ جب تک طلباء اپنا سیکیورٹی کلیئرینس سرٹیفکیٹ پیش نہیں کریں گے اس وقت تک انہیں داخلہ نہیں دیا جائے گا۔

انہوں‌ نے کہا کہ آزادی اظہار رائے کی آڑ میں جامعات کے نظام کو خراب کرنے کی اجازت نہیں دی جائے گی اور نہ طلباء کے تعلیمی امور میں خلل ڈالنے کی اجازت ہو گی۔ جامعہ کے ضابطہ اخلاق کی خلاف ورزی کرنے والے طلباء کو کسی وارننگ کے بغیر فارغ کر دیا جائے گا۔

ادھر مصر کی ایک دوسری بڑی یونیورسٹی" جامعہ الشمس" کی جانب سے جاری ضابطہ اخلاق میں بتایا گیا ہے کہ طلباء وطالبات دوران تدریس برمودا ٹراؤزر اور ٹی شرٹس استعمال نہیں کر سکیں گے بلکہ انہیں یونیورسٹی کی طرف سے فراہم کردہ یونیفارم استعمال کرنا ہو گا۔