.

مصر: انصار بیت المقدس کا رہنما ہلاک

سکیورٹی فورسز کو یہ کامیابی رفح میں چھاپے کے دوران ملی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

مصری سکیورٹی فورسز نے صحرائے سیناء میں سرگرم انتہا پسند گروپ انصار بیت القدس کے اعلی رہنما کو ایک کارروائی کے دوران ہلاک کر دیا ہے۔ اس اہم کامیابی کی مصری سکیورٹی فورسز کی طرف سے تصدیق کر دی گئی ہے۔

انصار بیت المقدس نامی گروپ مصری حکومت کا مخالف ہے اور اب تک مصری پولیس اہلکاروں سمیت دسیوں درجن سکیورٹی اہلکاروں کو ہلاک کر چکا ہے۔ حالیہ ہفتوں کے دوران اس گروپ نے کئی افراد کے سر یہ کہہ کر قلم کر دیے تھے کہ وہ اسرائیل کے لیے جاسوسی کرتے تھے۔

سکیورٹی فورسز کے ترجمان کے مطابق انصار بیت المقدس کا رہنما شہاتا فرحان پولیس اور فورسز کے خلاف کئی کارروائیوں میں ملوث تھا، اسے رفح میں ایک چھاپے کے دوران ہلاک کیا گیا ہے۔

ترجمان کے مطابق ایک ہفتہ قبل بھی انصار کے کمانڈر کو رفح ہی میں ایک جھڑپ میں مار دیا گیا تھا۔ مصری حکام کا کہنا ہے انصار بیت المقدس داعش کے ساتھ قریبی تعلقات رکھتی ہے۔

واضح رہے داعش نے پچھلے ماہ مصری عسکریت پسندوں کو مصری فوجیوں کے سرقلم کرنے کے لیے کہا تھا۔ امریکا نے بھی انصار بیت المقدس کو دہشت گرد تنظیم قرار دے رکھا ہے۔