.

مصر: رفح راہداری بند، 3 ماہ کے لیے ہنگامی حالت نافذ

اقدام جزیرہ نما سینا میں خوفناک کار بم دھماکے کے بعد کیا گیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

مصر نے جزیرہ نما سینا میں خوفناک کار بم دھماکے کے بعد رفح سے منسلک سرحد کو بند کر دیا ہے۔ یہ اقدام مصری فوج نے ہنگامی حالت اعلان کے تحت کیا ہے۔

جزیرہ نما سینا میں جمعہ کے روز کار بم دھماکے کے نتیجے میں دو درجن سے زائد مصری فوجی ہلاک ہوئے ہیں۔ اس صورتحال کے پش نظر ایوان صدر سے جاری کیے گے ایک بیان کے مطابق مصر میں فوری طور پر تین ماہ کے لیے ہنگامی حالت کا نفاذ کر دیا ہے۔

ہنگامی حالت کے اعلان کے لیے جاری کردہ بیان میں ہی رفح کی راہداری کی بندش کے بارے میں بھی بتایا گیا ہے۔

بیان میں کہا گیا ہے کہ پولیس اور فوج خطے کی سلامتی اور شہریوں کے تحفظ کے لیے تمام ضروری اقدامات کریں گی تاکہ دہشت گردی کے خطرے سے نمٹا جا سکے۔

جزیرہ نما سینا میں 30 فوجیوں کے ہلاک اور متعدد کے زخمی ہونے کے علاوہ فائرنگ کے ایک واقعے میں ایک فوجی افسر اور دو سپاہی ہلاک ہو گئے ہیں۔ یہ واقعہ العریش میں پیش آیا ہے۔

واضح رہے محمد مرسی کی برطرفی کے بعد جزیرہ نما سینا میں پرتشدد کارروائیوں میں اضافہ ہو گیا ہے، جبکہ مرسی کے کم از کم 1400 حامی ہلاک اور 15000 جیلوں میں بند کیے جانے کے علاوہ 200 سے زائد حامیوں کو سزائے موت سنائی جا چکی ہے۔