.

لبنانی سرحد پر حزب اللہ کی سرنگوں کا اسرائیلی دعویٰ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

ایک سینئر اسرائیلی جنرل نے دعویٰ کیا ہے کہ لبنان میں سرگرم شیعہ ملیشیا حزب اللہ نے اسرائیلی سرحد سے متصل علاقے میں سرنگوں کی کھدائی شروع کر رکھی ہے۔ بقول اسرائیلی افسر حزب اللہ کی یہ سرنگیں اسرائیل کے خلاف کوئی نیا محاذ کھولنے کا اشارہ اور ممکنہ جنگ کی تیاری ہو سکتی ہیں۔

حزب اللہ کی جانب سے سرنگوں کی کھدائی کا انکشاف ایک ایسے وقت میں ہوا ہے جب مصر اور اسرائیل دونوں کے لیے فلسطینیوں کی کھودی گئی سرنگیں درد سر بنی ہوئی ہیں۔

اسرائیل نے جولائی اور اگست کے دوران 51 دن تک فلسطینی علاقے غزہ کی پٹی پر یہ کہہ کر ہولناک جنگ مسلط کی کہ وہ فلسطینی مزاحمت کاروں بالخصوص حماس کی جانب سے کھودی گئی سرنگوں کا نیٹ ورک تباہ کر رہا ہے۔ پچھلے دو سال سے مصری فوج بھی غزہ کی سرحد پر سرنگوں کی مسماری کے نام پر ہی فوجی آپریشن جاری رکھے ہوئے ہے۔

اسرائیل کا کہنا ہے کہ فلسطینی مزاحمت کارکنوں نے اسرائیل تک رسائی کے لیے فلسطینی علاقوں کے اندر سے زیر زمین سرنگوں کی کھدائی شروع کر رکھی ہے تاکہ صہیونی تنصیبات پر اچانک حملہ کیا جا سکے۔

سنہ 2006ء میں بھی اسرائیل نے حزب اللہ کے خلاف جنگ مسلط کرتے ہوئے یہی الزام عائد کیا تھا کہ اس نے اسرائیل کو نقصان پہنچانے کے لیے سرنگوں کی کھدائی کی ایک نئی تکنیک شروع کر رکھی ہے۔

دوسری جانب اسرائیلی فوج نے ایک بیان میں یہ بھی کہا ہے کہ وہ لبنان سے متصل سرحد پر سرنگوں کی موجودگی کا سراغ لگانے کی کوشش کر رہے ہیں تاہم ابھی تک انہیں ایسا کوئی ثبوت نہیں ملا ہے۔ تاہم ایسے خدشات کو رد بھی نہیں کیا جا سکتا ہے۔

اسرائیلی فوج کے میجر جنرل یائیر گولان، جو لبنان اور شام کی سرحد پر تعینات فوج کے کور کمانڈر بھی ہیں، نے فوجی ریڈیو سے بات کرتے ہوئے کہا کہ ہماری پاس حزب اللہ کی جانب سے کھودی گئی سرنگوں کی موجودگی کا کوئی ٹھوس ثبوت نہیں ہے۔ اس لیے ہم لبنانی سرحد کے بارے میں وہ موقف اختیار نہیں کر سکتے جو غزہ کی پٹی کے بارے میں کر رہے ہیں کیونکہ غزہ کی پٹی میں فلسطینی جنگجوئوں کی کھودی گئی سرنگوں کے ہمارے پاس ٹھوس شواہد ہیں۔

ایک سوال کے جواب میں جنرل گولان کا کہنا تھا کہ حزب اللہ اس وقت شام میں صدر بشارالاسد کی حمایت میں خانہ جنگی میں شامل ہے۔ اس لیے وہ اسرائیل کے خلاف کوئی تیسرا محاذ نہیں کھول سکتی۔

خیال رہے کہ چند روز پیشتر اسرائیل کے عبرانی ٹی وی 7 نے عسکری ذرائع کے حوالے سے رپورٹ میں دعویٰ کیا تھا کہ لبنانی سرحد پر واقع فوج کے ایک کیمپ کے نیچے ایک سرنگ کی موجودگی کا پتہ چلا ہے تاہم اس کے بعد اس حوالے سے کوئی مزید پیش رفت سامنے نہیں آئی۔