.

اسرائیل کا غزہ کے ساتھ دوگذرگاہیں کھولنے کا اعلان

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

اسرائیل نے غزہ کی پٹی کے ساتھ واقع دو سرحدی گذرگاہوں (بارڈر کراسنگز) کو منگل کی صبح سے کھولنے کا اعلان کیا ہے۔

اسرائیلی فوج کی خاتون ترجمان نے سوموار کی شب فرانسیسی خبررساں ادارے اے ایف پی کے ساتھ گفتگو کرتے ہوئے اطلاع دی تھی کہ ''ایریز اور کیرم شالوم بارڈر کراسنگز کو معمول کے مطابق منگل کی صبح سے کھول دیا جائے گا''۔

اسرائیلی فوج نے اتوار کے روز غزہ کی پٹی کے ساتھ واقع ان دونوں سرحدی گذرگاہوں کو لوگوں اور اشیاء کی آمد ورفت کے لیے تاحکم ثانی بند کردیا تھا اور اس نے یہ اقدام جمعہ کو غزہ کی پٹی سے اسرائیل کے جنوبی علاقے کی جانب راکٹ فائر کیے جانے کے بعد کیا تھا۔یہ راکٹ ایشکول کے علاقے میں گرا تھا لیکن اس سے کوئی جانی نقصان نہیں ہوا تھا۔

16 ستمبر کے بعد غزہ سے اسرائیل کی جانب پہلی مرتبہ یہ راکٹ فائر کیا گیا تھا اور غزہ پر اسرائیل کی مسلط کردہ پچاس روزہ جنگ کے خاتمے کے بعد یہ دوسرا راکٹ حملہ تھا۔ اسرائیل اور حماس کے درمیان 26 اگست سے جنگ بندی جاری ہے۔

مصر کی ثالثی کے نتیجے میں فریقین یہ جنگ بندی ہوئی تھی۔اس کے بعد جنگ بندی کے حتمی معاہدے کے لیے اسرائیل اور حماس کے درمیان مصر کی ثالثی میں بالواسطہ بات چیت ہونا تھی لیکن فریقین کے درمیان ہنوز یہ مذاکرات شروع نہیں ہوسکے ہیں۔غزہ کی پٹی میں اسرائیلی فوج کی پچاس روز تک تباہ کن بمباری کے نتیجے میں قریباً بائیس سو فلسطینی شہید اور ہزاروں زخمی ہوگئے تھے جبکہ تہتر یہودی مارے گئے تھے۔ان میں زیادہ تر اسرائیلی فوجی تھے جو فلسطینی مزاحمت کاروں کے ساتھ جھڑپوں میں ہلاک ہوئے تھے۔