تیونس : بس پر فائرنگ ، تین فوجی ہلاک

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

تیونس میں مسلح جنگجوؤں نے ایک منی بس پر فائرنگ کردی ہے جس کے نتیجے میں تین فوجی ہلاک اور بارہ زخمی ہوگئے ہیں۔

تیونس کی وزارت دفاع کے ترجمان بالحسن اویسلتی نے ایک بیان میں کہا ہے کہ فائرنگ کا یہ واقعہ تیونس کے شمال مغرب میں پیش آیا ہے۔منی بس میں فوجی اور ان کے خاندانوں کے افراد سوار تھے۔

ترجمان نے مزید بتایا کہ ''الجزائر کی سرحد کے نزدیک واقع علاقے نیبور میں دوشہروں کیف اور جندوبہ کے درمیان فوجیوں پر حملہ کیا گیا ہے۔یہ دہشت گردی کی ایک کارروائی تھی''۔ تاہم ترجمان نے مبینہ حملہ آوروں کی شناخت کے حوالے سے کوئی تفصیل نہیں بتائی ہے۔

واضح رہے کہ تیونس میں 2011ء کے اوائل میں عرب بہاریہ انقلاب کے بعد سے جہادی عناصر سکیورٹی فورسز پر وقفے وقفے سے حملے کرتے رہتے ہیں اور اب تک ان کے حملوں میں دسیوں پولیس اہلکار اور فوجی ہلاک ہو چکے ہیں۔تیونس کی سکیورٹی فورسز 2012ء کے آخر سے الجزائر کی سرحد کے نزدیک واقع علاقے میں مشتبہ جنگجوؤں کے خلاف کارروائی کررہی ہیں۔

تیونس میں عرب بہاریہ انقلاب کے بعد گذشتہ ماہ پہلے آزادانہ پارلیمانی انتخابات منعقد ہوئے تھے جن میں سیکولر جماعت ندا تیونس نے برتری حاصل کی تھی اور اسلامی جماعت النہضہ دوسرے نمبر پر رہی تھی۔اب 23 نومبر کو صدارتی انتخابات ہوں گے۔تیونسی حکام اس خدشے کا اظہار کررہے ہیں کہ انتہا پسند عناصر ان انتخابات کو سبوتاژ کرنے کی کوشش کرسکتے ہیں اور وہ سکیورٹی اہلکاروں اور عام شہریوں پر حملے کرسکتے ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں