.

ریل میں دھماکے کے بعد حملہ، 3 مصری ہلاک، متعدد زخمی

صدر عبدالفتاح السیسی کے محل کے پاس بھی ایک دھماکہ، خاتون زخمی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

مصر کے دارلحکومت قاہرہ کے شمال میں صوبہ مینوفیہ میں ایک ریل میں بم دھماکے کے بعد کیے گئے حملے میں دو پولیس اہلکاروں سمیت تین افراد ہلاک ہو گئے ہیں۔

بدھ اور جمعرات کی درمیانی شب پیش آنے والے اس واقعے سے کچھ ہی دیر پہلے مصری صدارتی محل سے محض ایک سو میٹر کے فاصلے پر بھی ایک دھماکہ ہوا۔ جس کے نتیجے میں ایک راہگیر خاتون زخمی ہو گئی۔

بتایا گیا ہے کہ ریل میں دھماکہ ہونے کے بعد پولیس اہلکار جائے دھماکہ کا معائنہ کر رہے تھے کہ اسی دوران دہشت گردوں نے حملہ بھی کر دیا جس کے نتیجے میں دو اہلکار اور ایک عام چہری ہلاک ہو گیا۔

سرکاری حکام کے مطابق ریل ایک ریلوے سٹیشن پر کھڑی تھی کہ اس دوران دھماکہ کیا گیا ، تاہم اس دھماکے سے کوئی جانی نقصان نہیں ہوا البتہ ریل کو قدرے نقصان پہنچا اور آٹھ افراد زخمی ہو گئے۔

مصر میں پہلے منتخب صدر محمد مرسی کی فوجی سربراہ کے ہاتھوں جولائی 2013 میں برطرفی کے بعد سے مصر میں ایک طرف دھماکوں میں تسلسل ہے تودوسری جانب مرسی کے حامیوں کی بڑی تعداد ہلاک یا گرفتار کی جا چکی ہے۔

ایک اندازے کے مطابق معزول صدر مرسی کے 1500 سے زائد حامی ہلاک ہو چکے ہیں جبکہ 15000 سے زائد جیلوں میں بند ہیں۔ واضح رہے معزول صدر بھی تب سے جیل میں ہیں۔