شامی فوج کی اسکول پر بمباری سے37 بچے جاں بحق

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size

شام میں صدر بشار الاسد کی وفادار فوج نے دمشق کے نواحی علاقے القلمون میں ایک اسکول پر ھاون راکٹوں سے حملہ کیا ہے جس کے نتیجے میں کم سے کم 37 کم سن بچے جاں بحق اور بڑی تعداد میں زخمی ہوئے ہیں۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق انسانی حقوق کے کارکنوں کا کہنا ہے کہ شامی فوج کی جانب سے اسکول پر اس وقت راکٹ داغے گئے جب وہاں تعلیمی سرگرمیاں جاری تھیں۔

لندن میں قائم شامی آبرزویٹری نے ایک بیان میں کہا ہے کہ بدھ کے روز شامی فوج کی گولہ باری سے القلمون قصبے میں کم سے کم 37 بچے مارے گئے۔ انسانی حقوق گروپ کے ڈائریکٹر رامی عبدالرحمان نے بتایا کہ ان کے پاس شامی فوج کی گولہ باری سے اسکول کے 37 بچوں کی ہلاکت کی اطلاعات ہیں۔ یہ اسکول دمشق کے شمال مشرق میں واقع باغیوں کے زیر کنٹرول القلمون میں تھا۔

درایں اثنا شام میں جنرل انقلاب کونسل نے میڈیا کو جاری ایک ای میل میں بتایا ہے کہ دمشق کے مضافات میں ایک دوسری القابون کالونی میں سرکاری فوج نے نہتے شہریوں کا بدترین قتل عام کیا ہے۔ ای میل کے مطابق یہ کالونی شامی فوج اور باغیوں کے درمیان تقسیم ہے اور دونوں کے درمیان پوری کالونی پر قبضے کے لیے لڑائی جاری ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں