انتہا پسند یہودیوں نے مسجد کو آگ لگا دی

فلسطینی گاؤں میں دو سال پہلے بھی مسجد جلائی گئی تھی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

غرب اردن میں آباد یہودی آبادکاروں نے ایک فلسطینی گاؤں میں مسجد کو نذرآتش کردیا ہے۔ فلسطینی سکیورٹی ذرائع کے مطابق آگ سے مسجد پہلی منزل کو شدید نقصان پہنچا ہے اور پوری جل گئی ہے۔

یہ مسجد مغربی کنارے کے گاوں المغائر میں واقع ہے۔ جہاں شیلو نامی بستی سے تعلق رکھنے والے یہودی آباد کاروں نے اس مسجد پر حملہ کیا ہے۔

اس علاقے میں بھی انتہا پسند یہودی آباد کار وقفے وقفے سے فلسطینیوں کو نشانہ بناتے رہتے ہیں۔ اسی گاوں میں 2012 میں بھی ایک مسجد کو یہودی انتہا پسندوں نے جلا دیا تھا۔

ایک اور واقعے میں نامعلوم حملہ آوروں نے یہودی عبادت گاہ پر پٹرول بموں سے حملہ کیا ہے۔ اسرائیلی پولیس کے مطابق اس حملے سے زیادہ نقصان نہیں ہوا ہے۔

واضح رہے کہ ایک روز قبل اسرائیلی فوجیوں نے فائرنگ کرکے مغربی کنارے کے شہر الخلیل میں ایک فلسطینی کو شہید کر دیا تھا۔ اسرائیلی فوج اس علاقے میں مسلسل پرتشدد کارروائیاں کر رہی ہیں۔

فلسطینی اتھارٹی کے صدر محمود عباس نے ان واقعات کے حوالے سے اسرائیل پر مذہبی جنگ شروع کرنے کا الزام عاید کیا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں