روس، بشارالاسد کی مشروط 'رُخصتی' کی حمایت پر راضی؟

شامی اپوزیشن اور ماسکو میں سرد مہری کم ہونے لگی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

شام میں تین سال سے جاری مسلسل خانہ جنگی اور مسئلے کے سیاسی حل میں‌ناکامی کے بعد بحران کو بات چیت کے ذریعے ٹالنے کی مساعی ایک بار پھر زور پکڑنے لگی ہیں۔ جب سے شام کے لیے نئے عالمی مندوب اسٹفن ڈی میسٹورا نے عہدہ سنبھالا ہے شام کے سیاسی محاذ پرایک بار پھر گرما گرمی دکھائی دینے لگی ہے۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق شام کے محاذ جنگ میں تازہ پیش رفت اس وقت سامنے آئی جب شامی میڈیا نے یہ خبریں شائع کیں کہ روس نے صدر بشارالاسد کو مشروط طور پر اقتدار سے ہٹانے کی حمایت کا عندیہ دیا ہے۔ شام کے بحران کے حوالے سے یہ ایک اہم خبر ہے اور شامی اپوزیشن کےذرائع نے بھی اس کی تصدیق کی ہے۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ ماسکو نے ایک نیا مفاہمتی فارمولہ پیش کیا ہے جس میں بشارالاسد کو اس شرط پر اقتدار سے ہٹانے کی حمایت کا عندیہ دیا ہے کہ بشارالاسد کے جانے کے بعد بھی ان کا شامی حکومت اور ریاستی اداروں میں اثرو رسوخ باقی رہے گا لیکن وہ صدارت کے عہدے سے الگ ہو جائیں گے۔

ماسکو نے اس تجویز پر داعش اور النصرہ فرنٹ کے سوا دیگر اعتدال پسند اپوزیشن قوتوں سے صلاح مشورے کا بھی فیصلہ کیا ہے۔

روسی سفارتی ذریعے کا کہنا ہے کہ ماسکو کی جانب سے پیش کردہ تجویز کے بعد شامی اپوزیشن رہ نما معاذ الخطیب نے روسی وزیرخارجہ سرگئی لاوروف سے ملاقات کی اور ان کی تجویز کا خبر مقدم کیا ہے۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ شامی اپوزیشن رہ نما قدری جمیل، معاذ الخطیب، ریاض سیف اور میشل کیلو جلد ماسکو کا دورہ بھی کریں گے۔ روسی حکومت نے اپنے مجوزہ منصوبے پران سے بات چیت کے لیے لائحہ عمل تیار کرنا شروع کر دیا ہے۔

گذشتہ ہفتےکے روز شامی اپوزیشن رہ نما احمد معاذ الخطیب نے روس کے دورے کے دوران وزیرخارجہ لاوروف سے دمشق کی موجودہ صورت حال پر تبادلہ خیال بھی کیا ہے۔ ملاقات کے بعد معاذ الخطیب نے اپنے "ٹویٹر"اکاؤنٹ پر پوسٹ ایک بیان میں روسی وزیرخارجہ سے ملاقات کو مثبت قرار دیا۔

انہوں نے کہا کہ سرگئی لاوروف سے ملاقات میں شامی بحران کےحل کے نئے پہلو بھی زیرغور آئے ہیں تاہم انہوں نے یہ بھی واضح کیا کہ وہ شام کے بحران کا ایک ایسا حل چاہتے ہیں جس میں اسد رجیم کی کسی قسم کی مداخلت نہ ہو اور ملک میں جاری کشت و خون کا سلسلہ جلد از جلد بند کیا جا سکے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں