.

اسرائیل: وزیر خارجہ کے قتل کا منصوبہ، 4 فلسطینی گرفتار

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

اسرائیل نے چار فلسطینی شہریوں کواس الزام میں گرفتار کر لیا ہے کہ انہوں نے مبینہ طور پر اسرائیلی وزیر خارجہ لائبرمین کو ہلاک کرنے کا منصوبہ بنایا تھا۔

اسرائیل کی طرف سے لگائے گئے الزام کے مطابق وزیر خارجہ کو مغربی کنارے میں قائم یہودی بستی میں آمد کے موقع پر ٹینک شکن راکٹ سے نشانہ بنایا جانا تھا۔

بتایا گیا ہے کہ حماس نے یہ منصوبہ جولائی اور اگست اسرائیل کی غزہ پر مسلط کردہ جنگ کے دنوں مِیں ترتیب دیا تھا۔ اسرائیلی سلامتی کے ادارے شین بیٹ کی طرف سے اس بارے میں جاری کیے گئے بیان میں کہا گیا ہے کہ حراست میں لیے گئے چار میں تین فلسطینیوں کا تعلق حماس کے ساتھ ہے۔

اسرائیلی ادارے کے مطابق ان افراد نے دوران تفتیش اپنے جرم کا اعتراف کرتے ہوئے کہا ہے کہ لائیبرمین کو ہلاک کر کے وہ سخت پیغام دینا چاہتے تھے۔ حماس کی طرف سے فوری طور پر اسرائیل کے ان الزامات پر کوئی رد عمل سامنے نہیں آیا ہے۔

گرفتار فلسطینیوں پر فوج کی طرف سے لگائے گئے الزامات کے تحت فوجی عدالت میں مقدمہ شروع کیا گیا ہے تاہم اس بیان میں یہ نہیں بتایا گیا ہے مبینہ ملزمان کی طرف سے کوئی جواب داخل کیا گیا ہے یا نہیں۔

واضح رہے چاروں فلسطینیوں کی رہائش نوکدیم یہودی بستی کے قریب ہے جبکہ لائبرمین اسی یہودی میں مقیم ہے۔

اسرائیل مغربی کنارے اور مشرقی یروشلم ممیں مسلسل یہودی بستیوں کی تعمیر کے اعلانات کر رہا ہے جس پر عالمی برادری کو بھی تشویش ہے۔ اسرائیل نے اس صورت حال میں عالمی برادری کی توجہ بٹانے کے لیے مقبوضہ یروشلم میں کشیدگی کو بڑھا رکھا ہے۔ اسرائیل ایک منصوبے کے تحت فلسطینیوں کے گھر گرانے اور یہودی بستیوں کی تعمیر کے لیے کوشاں ہے۔