.

یمن: ایک غیرملکی سمیت آٹھ افراد کے اغواکار ہلاک

سکیورٹی فورسز کی کامیاب کارروائی سے آٹھوں افراد بازیاب

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

یمن کی سکیورٹی فورسز نے اغوا کیے گئے سات یمنی شہریوں اور ایک غیر ملکی کو اغوا کاروں سے کارروائی کر کے رہا کرا لیا ہے۔ ان افراد کو القاعدہ کے عسکریت پسندوں نے اغوا کیا تھا۔

یمن کی سپریم سکیورٹی کمیٹی کی طرف سے جاری کیے گئے بیان کے مطابق القاعدہ کےتمام اغواکار عسکریت پسندوں کو یمنی فورسز نے کارروائی کے دوران ہلاک کر دیا ہے۔ اس دوران ایک رہا کرائے گئے افراد میں سے ایک شخص کو معمولی زخم آئے ہیں۔

البتہ سپریم سکیورٹی کمیٹی کی طرف سے جاری کیے گئے بیان میں اغوا کاروں سے چھڑائے گئے غیر ملکی کے بارے میں وضاحت نہیں کی گئی کہ اس کا کس ملک سے تعلق ہے۔ نہ ہی یہ بتایا گیا ہے کہ عسکریت پسندوں نے آن آٹھ افراد کو کہاں سے اغوا کیا تھا۔

امریکی اتحادی یمن میں اغوا کے واقعات عام ہیں۔ جہاں کئی طرح کی عسکریت پسندی اور مزاحمت گذشتہ کئی برسوں سے جاری ہے۔ القاعدہ کے علاوہ حالیہ مہینوں میں حوثیوں نے بھی باغیانہ انداز اختیار کر رکھا ہے اور سابق صدر پر بھی الزام ہے کہ وہ بدامنی کا اہم کردار ہیں۔

انصار الشرعیہ نامی سنی عسکریت پسندوں کا مقامی گروپ القاعدہ سے منسلک ہے، تاہم حوثیوں کی حالیہ کارروائیوں کے بعد یہ کافی دباو میں ہے۔

اغوا کے واقعات میں مغربی ممالک کے شہریوں کو ٹارگٹ کرنے کی کوشش کی جاتی ہے جبکہ قبائل حکومت سے اپنے مطالبات منوانے کے لیے بھی ایسی کارروائیاں کرتے ہیں۔