یمن: حوثیوں اور سنی قبائلیوں میں جھڑپ، 5 ہلاک

حوثیوں کی صنعاء میں مخالفین کو تلاش کے لیے مہم

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

یمن کے حوثی جنگجووں اور سنی قبائل کے درمیان جھڑپ میں پانچ افراد ہلاک ہو گئے ہیں۔ طبی ذرائع کے مطابق ماہ ستمبر میں حوثیوں کی طرف سے صنعا پر چڑھائی کے بعد سے تشدد کا یہ سب سے بڑا واقعہ ہے۔

حسبہ کے علاقے کے رہائشیوں نے بتایا ہے کہ صبح سویرے فریقین کے درمیان جھڑپیں شروع ہو گئیں اور دو گھنٹے تک جاری رہیں۔

بتایا گیا ہے کہ یہ تصادم اس وقت شروع ہوا جب ایک چیک پوانٹ پر حوثی جنگجووں نے سنی الاحمر کے بعض پیروکاروں کو روکنے کی کوشش کی تو انہوں نے انکار کر دیا۔

واضح رہے حوثی شیعہ ایک اہم سیاسی طاقت کے طور پر ابھرے ہیں۔ دارالحکومت میں سنی اسلام پسندوں کو حوثیوں کے صنعاء میں آنے کا سب سے زیادہ نقصان ہوا ہے۔

حوثیوں نے اپنے ویب سائٹ پر اپنے بیان میں کہا ہے کہ وہ پورے شہر کی چھان بین کر رہے ہیں تاکہ بھاگ جانے والوں کو پیچھا کیا جا سکے۔

یمن 2011 سے اس وقت مسلسل بد امنی کا شکار ہے جب سے مطلق العنان حکمران علی عبداللہ صالح کی برطرفی ہوئی ہے۔ جبکہ متعدد عسکریت پسند گروپ یمن میں عسکری کارروائیوں میں مصروف ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں