.

شامی سرحد کے قریب گوریلا کارروائی میں چھ لبنانی فوجی ہلاک

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

شام کی سرحد سے متصل علاقے بعلبک میں جرود کے مقام پر نامعلوم مسلح افراد نے اچانک حملہ کر کے کم سے کم چھ لبنانی فوجی ہلا کر دیے ہیں۔

خبر رساں ایجنسی’’اے ایف پی‘‘ کے مطابق یہ واقعہ مشرقی لبنان میں اس وقت پیش آیا جب لبنانی فوج اور مسلح عسکریت پسندوں کے درمیان جھڑپیں ہو رہی تھیں۔ اس دوران جرود کے مقام پر نامعلوم مسلح افراد نے گھات لگا کر فوج کی ایک گشتی پارٹی پر حملہ کر دیا جس کے نتیجے میں چھ فوجی ہلاک اور متعدد زخمی ہو گئے۔ حملہ آوروں نے مشین گنوں اور دستی بموں اور راکٹوں کا بھی استعمال کیا۔

العربیہ ٹی وی کی رپورٹ میں ذرائع کے حوالے سے بتایا گیا ہے شام کی سرحد سے متصل بعلبک شہر اور دیگر سرحدی قصبوں میں دراندازی پر نظر رکھنے کے لیے فوج تعینات کی گئی تھی۔ اس دوران اچانک گھات میں بیٹھے مشتبہ عسکریت پسندوں نے اندھا دھند فائرنگ شروع کر دی جس کے نتیجے میں چھ فوجی ہلاک ہوئے۔

ذرائع کے مطابق ایک فوجی شدید زخمی ہوا ہے جس کی حالت خطرے میں بتائی جاتی ہے جبکہ ایک ذریعے نے بتایا ہے کہ زخمی فوجی بھی دم توڑ گیا ہے۔

واقعے کے بعد فوج کی اضافی نفری طلب کی گئی ہے۔ تاہم عسکریت پسندوں کی کارروائی سے قبل پہاڑی سرحد سے متصل پہاڑی علاقوں میں لبنانی فوج اور دہشت گردوں کے درمیان خون ریز جھڑپیں ہوئی تھیں۔ فوج نے عسکریت پسندوں کے خلاف کارروائی میں توپ سے بھی گولہ باری جس کے باعث عسکریت پسندوں کو جانی و مالی نقصان کا سامنا کرنا پڑا تھا۔

قبل ازیں لبنانی فوج کی جانب سے جاری ایک بیان میں بتایا گیا تھا کہ سرحد کے قریب اس کےسات اہلکار لاپتا ہیں۔

خیال رہے کہ سرحدی علاقے میں یہ جھڑپ ایک ایسے وقت میں ہوئی ہے جب دولت اسلامی ’’داعش‘‘ کے خود ساختہ خلیفہ ابو بکر البغدادی کی ایک اہلیہ اور بیٹے کی گرفتاری کی خبریں بھی گردش کر رہی ہیں۔