.

کرد فوج نہ ہوتی تو داعش کرکوک پر قبضہ کر لیتی: بارزانی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

عراق کے نیم خود مختار کرد اکثریتی صوبہ کردستان کے صدر مسعود بارزانی نے کہا ہے کہ اگر البیشمرکہ فورس مداخلت نہ کرتی تو دولت اسلامی’’داعش‘‘ کرکوک پر قبضہ کرلیتی۔

ان کا کہنا ہے کہ وہ تنہا کرد فوج کوموصل میں داخل نہیں کریں گے کیونکہ موصل میں جہاں ایک طرف داعش اور مقامی آبادی کے درمیان جنگ چل رہی ہے وہیں کردوں اورعربوں کےدرمیان بھی کشمکش موجود ہے۔ ضرورت پڑنے پر اتحادیوں سے مل کرموصل کوعسکریت پسندں سے بچانے کے لیے ہی مداخلت کریں گے۔

'العربیہ' ٹی وی کو دیے گئے ایک خصوصی انٹرویو میں مسعود بارزانی کا کہنا تھا کہ اور البیشرکہ فوج مداخلت نہ کرتی تو داعش کرکوک پر قبضہ کر لیتی۔

ایک سوال کے جواب میں مسعود بارزانی نے الزام عاید کیا کہ سابق عراقی وزیراعظم نوری المالکی عراقی فوج کو تباہ کرنے کے ذمہ دار ہیں۔ ان کا کہنا ہے کہ عالمی برادری کی مدد اور تربیت سے برسوں میں تیار ہونے والی فوج کو نوری المالکی نے چند گھنٹوں میں تباہ کردیا۔