شامی صدر 'جعلی دوروں' سے قوم کو گمراہ کر رہے ہیں

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

شام میں صدر بشار الاسد اور ان کی حکومت کی جانب سے پچھلے چند ماہ کے دوران تواتر کے ساتھ یہ خبریں آتی رہی ہیں کہ سرکاری فوج نے دمشق کے قریب دفاعی اہمیت کی حامل جوبر کالونی سے باغیوں کو نکال باہر کرنے کے بعد اس کا کنٹرول سنھبال لیا ہے۔

نیز سال نو کے موقع پر صدر بشارالاسد نے خود بھی جوبر کالونی کا دورہ کیا اور وہاں پر موجود فوجیوں سے ملاقات کی۔ تاہم صدر بشارالاسد کے دورے کا جھوٹ اس وقت بے نقاب ہو گیا جب پتا چلا کہ وہ جوبر کالونی میں داخل ہی نہیں ہوئے ہیں۔ جس کالونی کا انہوں نے دورہ کیا وہ جوبر نہیں بلکہ الزبطانی کالونی تھی۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق دارالحکومت دمشق کی جوبر کالونی پر اسدی فوج کے قبضے کے دعوئوں کی شامی اپوزیشن کی جانب سے بھی مسلسل تردید کی جاتی رہی ہے۔ اکتیس دسمبر کو صدر بشار الاسد کے دفترسے جاری ایک بیان میں دعویٰ کیا گیا تھا کہ صدر مملکت نے جوبر کالونی کا دورہ کیا اور وہاں پر موجود فوجیوں سے ملاقات کی ہے۔

تاہم سرکاری سطح پر جو تصاویر جاری کی گئی ہیں ان میں صدر اسد کو دمشق میں گورنریٹ ڈائریکٹوریٹ کی الزبطانی کالونی میں سرکاری فوجیوں سے ملاقات کی تھی ان کے ہمراہ کھانا بھی کھایا جس کی تصاویر میڈیا کو جاری کی گئیں۔

خیال رہے کہ شامی حکومت کی جانب سے جاری خبروں میں جوبر کالونی کے سوا کسی دوسری کالونی کے دورے کا کوئی تذکرہ نہیں کیا گیا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں