.

فٹبال میچ دیکھنے کی پاداش میں داعش کے ہاتھوں 13 افراد قتل

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

شدت پسند تنظیم دولت اسلامی’’داعش‘‘ نے عراق اور اردن سے تعلق رکھنے والے تیرہ افراد کو ایشیائی فٹ بال ٹیموں کے مابین فٹبال میچ دیکھنے کی پاداش میں موت کے گھاٹ اتار دیا۔

اردنی خبر رساں ایجنسی’’بترا‘‘ کے مطابق داعشی جنگجوئوں نے عراق کے شمالی شہر موصل کی یرموک کالونی میں تیرہ افراد کو قتل کیا۔ ان میں عراقی اور اردنی دونوں شامل ہیں۔

عراقی ذرائع ابلاغ کے مطابق فٹ بال میچ دیکھنے کی پاداش میں داعشی جنگجوئوں نے کئی افراد کو حراست میں لے رکھا تھا۔ حال ہی میں انہیں یرموک کالونی کے ایک اسٹیڈیم میں لایا گیا جہاں مقامی آبادی کی بڑی تعداد کو بھی’عبرت‘ دلانے کے لیے جمع کیا گیا تھا۔ سیکڑوں کے مجمع میں داعشی جنگجوئوں نے فٹ بال میچ کے شائقین کو گولیاں مار کر قتل کر دیا۔ اس موقع پر داعشی جنگجوئوں کی جانب سے لائوڈ اسپیکروں پر مسلسل یہ اعلان بھی کیا جاتا رہا ہے کہ دولت اسلامی کے احکامات کی مخالفت کرنے والوں کا یہی انجام ہو گا۔

موصل کے ایک مقامی صحافی نے العربیہ ڈاٹ نیٹ کو بتایا کہ قتل کیے گئے عراقی اور اردنی شہریوں کی لاشیں وہیں پھینک دی گئیں اور ان کے عزیزواقارب کو میتیں اٹھانے کی اجازت بھی نہیں دی گئی۔ خیال رہے کہ داعش فٹ بال سمیت کئی کھیلوں کو مغربی ممالک کے کھیل قرار دے کران کی سخت مخالفت رکرہی ہے۔