.

داعش کی یرغمال جاپانیوں کو قتل کرنے کی دھمکی

72 گھنٹوں میں رہائی کے عوض 20 کروڑ ڈالرز تاوان دینے کا مطالبہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

عراق اور شام میں سرگرم انتہا پسند تنظیم 'داعش' نے دھمکی دی ہے کہ اگر جاپان نے 72 گھنٹوں کے اندر دو جاپانی شہریوں کی رہائی کے لیے 200 ملین (20 کروڑ) ڈالرز ادا نہ کیے تو ان یرغمالیوں کو ہلاک کر دیا جائے گا۔

داعش نے یہ دھمکی انٹرنیٹ کے ذریعے سامنے آنے والی ایک ویڈیو میں دی ہے۔ یہ ویڈیو انتہا پسندوں کی خبروں کی ترویج کے لیے مشہور ویب سائٹس پر گذشتہ روز اپ لوڈ کی گئی تھی۔

ویڈیو میں نارنجی کپڑوں میں ملبوس گھٹنوں کے بل زمین پر بیٹھے دو ایشیائی باشندوں کے پیچھے چھری ہاتھ میں لیے کھڑا ایک نامعلوم سیاہ پوش جاپانیوں کو یہ پیغام دے رہا ہے: "آپ کے پاس اپنی حکومت پر دباؤ ڈالنے کے لیے صرف 72 گھنٹے کا وقت باقی رہ گیا ہے کہ وہ آپ کے دو ہم وطنوں کی زندگی کے عوض دو سو ملین ڈالرز مالیت کا 'فدیہ' ادا کریں''۔

داعش ماضی میں یرغمال غیر ملکیوں کے گلے کاٹنے کے دردناک مناظر پر مبنی ویڈیو جاری کرچکی ہے۔ اس دہشت گرد تنطیم نے پہلی مرتبہ جاپانی یرغمالیوں کے بارے میں ویڈیو جاری کی ہے۔ داعش کے جاپان کے ان دو یرغمالیوں کی شناخت کینجی گوتو جوگو اور ھارونا یوکاوا کے نام سے کی گئی ہے۔

ادھر جاپانی وزارت خارجہ میں شعبہ انسداد دہشت گردی کے ایک عہدیدار نے تصدیق کی ہے کہ حکام کو مبینہ ویڈیو کے بارے میں علم ہے۔ ہم 'جاپانی حکومت اور عوام کے نام پیغام' کے عنوان سے جاری ہونے والی اس ویڈیو کی صداقت کے بارے میں تحقیق کر رہے ہیں۔

یاد رہے کہ یہ ویڈیو جاپانی وزیر اعظم شنزو ایبے کے دورہ مشرق وسطیٰ کے موقع پرسامنے آئی ہے۔انھوں نے ہفتے کے روز قاہرہ میں داعش کی عراق اور شام میں برپا کردہ جنگ سے متاثرہ ممالک کی ترقی کے لیے جاپان کی طرف سے بیس کروڑ ڈالرز مالیت کی غیر فوجی امداد مہیا کرنے کا اعلان کیا تھا۔

شام میں انسانی حقوق کی خلاف ورزیاں مانیٹر کرنے والے ایک گروپ کے مطابق داعش اپنی خود ساختہ خلافت کے اعلان کے بعد سے اب تک شام اور عراق میں 1500 افراد کو ہلاک کر چکی ہے۔