.

شامی فوج کا داعش پر فضائی حملہ، 43 شہریوں کی ہلاکت

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

شام کے شمال مشرقی علاقے میں سرکاری فوج کے دولت اسلامی (داعش) کے ایک ٹھکانے پر فضائی حملے میں تینتالیس افراد ہلاک اور کم سے کم ڈیڑھ سو زخمی ہوگئے ہیں۔

برطانیہ میں قائم شامی آبزرویٹری برائے انسانی حقوق نے بدھ کو اطلاع دی ہے کہ شامی فوج کے جنگی طیارے نے تل حمیس کے علاقے میں ایک مویشی منڈی پر بمباری کی ہے۔قبل ازیں آبزرویٹری نے منگل کو اس حملے میں ستائیس افراد کی ہلاکت کی اطلاع دی تھی۔

تل حمیس صوبہ الحسکہ میں واقع ہے۔اس پر داعش کا قبضہ ہے جبکہ اس کے دوسرے علاقوں پر شامی فوج اور کرد جنگجوؤں کا کنٹرول ہے۔شام کے حکومت نواز اخبار الوطن نے ایک رپورٹ میں کہا ہے کہ تل حمیس کے جنوب میں اسدی فوج کی کارروائی کے دوران داعش کے متعدد جنگجو ہلاک ہوگئے ہیں۔

اخبار نے دعویٰ کیا ہے کہ داعش کے جنگجو مویشی منڈی کو اپنے زیر قبضہ کنووں سے نکالے گئے تیل کی غیر قانونی اسمگلنگ کے لیے ایک ٹھکانے کے طور پر استعمال کررہے تھے۔داعش نے شام کے مشرقی علاقوں میں واقع تیل کے متعدد کنووں پر قبضہ کررکھا ہے۔

امریکا کا کہنا ہے کہ ان کنووں سے حاصل ہونے والے تیل سے اس جنگجو گروپ کو خاطر خواہ آمدن حاصل ہورہی ہے۔امریکا کے جنگی طیارے شام میں داعش کے تیل کے انفرااسٹرکچر کو متعدد مرتبہ فضائی حملوں میں نشانہ بنا چکے ہیں۔