.

"ترکی، چین سے میزائل سسٹم خریدے گا"

انقرہ نے سیکیورٹی سے متعلق نیٹو، امریکی اعتراضات مسترد کر دیئے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

امریکا اور نیٹو کی جانب سے اعتراضات کے باوجود ترکی، چینی ساختہ میزائل ڈیفنس سسٹم خریدے گا۔ اس سسٹم کی مالیت 3٫4 ارب ڈالر ہے۔

ترک وزیر دفاع عصمت یلماز نے پارلیمنٹ میں ایک تحریری سوال کے جواب میں بتایا کہ انقرہ اس میزائل سسٹم کو نیٹو کے دفاعی شیلڈ پروگرام میں ضم کرنے کے بجائے الگ ہی استعمال کرے گا۔

ترکی نے میزائل سسٹم کی خریداری کا ٹینڈر سنہ دو ہزار تیرہ میں چینی کمپنی کو دیا جس پر امریکی اور نیٹو حکام نے اس معاہدے پر سیکیورٹی کے حوالے سے اعتراضات اٹھائے جانے کا اشارہ ظاہر کیا تھا۔

ترکی نے ان اعتراضات سامنے آنے کے بعد کہا تھا کہ اس معاملے پر فرانس سے مذاکرات جاری ہیں مگر یلماز کے مطابق اس پر نئی بولیاں وصول نہیں ہوئیں۔ ترک وزیر کا کہنا تھا "یہ منصوبہ غیر ملکی فنڈنگ سے پورا کیا جائے گا۔ بولیوں کے تخمینے کا کام مکمل ہو گیا ہے اور کوئی نئی بولی سامنے نہیں آئی ہے۔"

یلماز کے مطابق "اس نئے سسٹم کو ترکی کے قومی دفاعی نظام میں ضم کیا جائے گا۔ یہ نظام، نیٹو کے دفاعی نظام سے علاحدہ رکھا جائے گا۔"