.

استنبول میں برف باری کا نیا ریکارڈ

مشرق وسطیٰ میں برفانی طوفان کے بعد سردی کی شدید لہر

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

مشرق وسطیٰ بھر میں برف باری کا سلسلہ جاری ہے جس سے سردی میں اور اضافہ ہوگیا ہے جبکہ ترکی کے سب سے بڑے شہر استنبول میں برف باری کا اٹھائیس سالہ پرانا ریکارڈ ٹوٹ گیا ہے۔لبنان میں نئے برفانی طوفان کے بعد پہاڑی علاقوں مِیں تعلیمی ادارے دو روز کے لیے بند کر دیے گئے ہیں۔

استنبول کی میٹروپولیٹن میونسپلٹی نے جمعرات کو اطلاع دی تھی کہ شہر میں برف باری کا اٹھائیس سالہ ریکارڈ ٹوٹ گیا ہے اور شہر کے مغربی حصے میں 75 سینٹی میٹر تک برف باری ہوئی ہے۔بلدیہ نے ایک بیان میں کہا ہے کہ''ہماری ٹیموں نے سڑکوں کو کھلا رکھنے کے لیے 18543 ٹن نمک اور 926 ٹن کیمیائی مواد استعمال کیا ہے''۔

بلدیہ کی جانب سے سڑکوں سے برف کے تودوں کو ہٹانے اور پگھلانے کے لیے ان کوششوں کے باوجود استنبول کے بہت سے علاقوں میں کاروبارِ زندگی معطل ہو کر رہ گیا ہے اور بہت سے شہریوں نے سوشل میڈیا پر یہ شکایت کی ہے کہ 1987ء میں برف باری سے استنبول اتنا متاثر نہیں ہوا تھا حالانکہ اس برفانی طوفان کا دورانیہ زیادہ رہا تھا۔درایں اثناء بلدیہ کا کہنا ہے کہ وہ چوبیس گھنٹے الرٹ ہے اور اس کے 4815 اہلکار اور 1028 گاڑیاں سڑکوں کو رواں رکھنے کے لیے کام کررہی ہیں۔

لبنان میں اسکولوں کی بندش

ادھر لبنان کے پہاڑی علاقوں میں شدید برف باری کے بعد وزیر تعلیم نے سطح سمندر سے ایک ہزار میٹر کی بلندی پر واقع دیہات میں قائم اسکولوں کو دو روز (جمعہ اور ہفتہ) کے لیے بند کرنے کا حکم دیا ہے۔

دارالحکومت بیروت کے رفیق حریری بین الاقوامی ہوائی اڈے پر قائم محکمہ موسمیات نے اطلاع دی ہے کہ سطح سمندر سے 900 میٹر بلندی پر واقع علاقوں میں برف باری ہوئی ہے اور وہاں 90 کلومیٹر فی گھنٹہ کی رفتار سے تیز ہوائیں چل رہی ہیں۔محکمے کا کہنا تھا کہ برفانی طوفان سینڈی جمعہ کی شام تک ختم ہوجائے گا۔

لبنان کی نیشنل نیوز ایجنسی کی اطلاع کے مطابق شمالی ضلع عکار کے بعض علاقوں میں برفانی طوفان کے نتیجے میں بجلی منقطع ہوگئی ہے۔اس علاقے میں طوفانی بارش بھی ہوئی ہے جس سے دریاؤں میں سیلاب کی کیفیت ہے اور زرعی زمینیں اور کھلے میدان پانی میں ڈوب گئے ہیں۔علاقے کے کسانوں نے اس خدشے کا اظہار کیا ہے کہ ان کی فصلیں تباہ ہوسکتی ہیں۔

اردن

پڑوسی ملک اردن میں بھی برف باری کا سلسلہ جاری ہے اور اس کے محکمہ موسمیات کی اطلاع کے مطابق ملک کے جنوب میں واقع پہاڑی علاقوں ابھی اور برف باری متوقع ہے۔

محکمہ موسمیات نے سرد ہواؤں اور بارشوں کے نتیجے میں موسم شدید سرد ہونے کی پیشین گوئی کی ہے اور یہ بھی کہا ہے کہ سطح سمندر سے 600 میٹر کی بلندی پر واقع علاقوں میں اور برف باری ہوسکتی ہے۔