.

مصر:سرمایہ کاری قانون میں ترمیم کی منظوری

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

مصر کے صدر عبدالفتاح السیسی نے بین الاقوامی کانفرنس کے انعقاد سے قبل سرمایہ کاری سے متعلق ملکی قانون میں ایک ترمیم کی منظوری دے دی ہے۔

ان کے دفتر کا کہنا ہے کہ اس ترمیم کا مقصد مصر میں غیرملکی سرمایہ کاری کی راہ میں حائل رکاوٹوں کو دور کرنا ہے اور اس سے ملک میں منصوبوں کے لیے بیرونی ممالک سے رقوم کی ترسیل میں سہولت میسر آئے گی۔

صدارتی ترجمان علاء یوسف نے ایک بیان میں کہا ہے کہ ''ترمیمی قانون کے تحت واضح پالیسیاں اختیار کی جائیں گی جن سے سرمایہ کاروں کو شفاف فریم ورک کے ذریعے یکساں مواقع حاصل ہوں گے۔اس سے سرمایہ کار دوست ماحول میسر آئے گا اور ملک میں بین الاقومی ،عرب اور مصری سرکایہ کاری کے فروغ کی راہ ہموار ہو گا''۔

اس قانون کے تحت حکومت کے ساتھ طے پانے والے سمجھوتوں میں ضمانتیں دی جائیں گی اور مزدوری کے مواقع مہیا کرنے والے منصوبوں کے لیے سرمایہ کاری پر مراعات کی پیش کش کی جائے گی۔ماضی میں اس قانون کے تحت مصر میں سرمایہ کاری پر قدغنیں عاید تھیں اور بالعموم قانونی تنازعات شروع ہوجاتے تھے۔

جان کیری کی الشرم الشیخ آمد

درایں اثناء امریکی وزیرخارجہ جان کیری مصر کے سیاحتی مقام الشرم الشیخ پہنچ گئے ہیں جہاں وہ صدر عبدالفتاح السیسی کے ساتھ سخت گیر جنگجو گروپ دولت اسلامی (داعش) کے خلاف جنگ کے حوالے سے تبادلہ خیال کرنے والے تھے۔ جان کیری اردن کے شاہ عبداللہ دوم اور فلسطینی صدر محمود عباس اور دوسرے لیڈروں سے بھی ملاقات کریں گے۔

الشرم الشیخ میں منعقد ہونے والی عالمی سرمایہ کاری کانفرنس میں ایک سو بارہ ممالک سے تعلق رکھنے والے قریباً دو ہزار مندوبین شرکت کریں گے۔ان میں تیس سربراہان ریاست اور ملٹی نیشنل کمپنیوں کے سربراہان بھی شامل ہوں گے۔مصر کو توقع ہے کہ اس کانفرنس سے ملک میں سرمایہ کاری کو فروغ حاصل ہوگا جس سے اس کی بحران کا شکار معیشت کو اپنے پاؤں پر کھڑا کرنے میں مدد ملے گی۔