.

مصریوں کی منشاء کے برعکس اقتدار میں نہیں رہوں گا:السیسی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

مصر کے صدر عبدالفتاح السیسی نے کہا ہے کہ اگر مصریوں نے ملکی قیادت میں نئی تبدیلی کا مطالبہ کیا تو وہ اس لمحے کا انتظار نہیں کریں گے اور اقتدار سے الگ ہو جائیں گے۔

انھوں نے یہ بات سیاحتی مقام شرم الشیخ میں''مصر :مستقبل'' کے موضوع پر منعقدہ کانفرنس کی اختتامی تقریب میں تقریر کرتے ہوئے کہی ہے۔انھوں نے کہا کہ ''مصری تبدیلیاں لانے کی صلاحیت رکھتے ہیں۔اگر وہ اپنی قیادت کو دوبارہ تبدیل کرنے کے خواہاں ہوئے تو میں اس لمحے کا انتظار نہیں کروں گا''۔

انھوں نے اپنی تقریر میں کہا کہ ''مصر کو اقتصادی ترقی کے لیے دو سو سے تین سو ارب ڈالرز تک رقم درکار ہے''۔انھوں نے مصر میں معاشی منصوبوں کی بروقت تکمیل کی ضرورت پر بھی زور دیا۔

صدر عبدالفتاح السیسی نے اس کانفرنس کے حاصلات کے حوالے سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ اس موقع پر مصر میں بجلی پیدا کرنے کے متعدد سمجھوتوں پر دستخط کیے گئے ہیں۔ان کا کہنا تھا کہ ہم مصر میں مزید گورنریاں (صوبے) قائم کرنا چاہتے ہیں۔

اپنی تقریر میں انھوں نے سعودی عرب کے سابق فرمانروا مرحوم شاہ عبداللہ بن عبدالعزیز کو خراج عقیدت پیش کیا اور ان کا شکریہ ادا کیا جنھوں نے گذشتہ سال مصر کی اقتصادی امداد کے لیے اس طرح کی کانفرنس بلانے کی تجویز پیش کی تھی۔انھوں نے مصر کے ساتھ کھڑا ہونے والے ممالک اور لیڈروں کا بھی شکریہ ادا کیا۔