.

اسرائیلی فورسز کی کارروائی ،حماس کے 6 ارکان گرفتار

غرب اردن کے شہر نابلس سے بھاری مقدار میں دھماکا خیز مواد پکڑنے کا دعویٰ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

اسرائیل کی داخلی سکیورٹی سروس شین بیت نے اتوار کے روز غرب اردن میں اسلامی تحریک مزاحمت (حماس) کے چھے ارکان کو گرفتار کر لیا ہے اور ان کے قبضے سے دھماکا خیز مواد پکڑنے کا بھی دعویٰ کیا ہے جو وہ مبینہ طور پر اسرائیل میں حملوں کے لیے استعمال کرنے کی منصوبہ بندی کررہے تھے۔

شین بیت کی جانب سے جاری کردہ ایک بیان میں کہا گیا ہے کہ سکیورٹی فورسز نے کئی کلوگرام سلفر اور پچیس گرام مرکری پکڑ لی ہے۔اس کو بم کی تیاری میں استعمال کیا جاسکتا ہے۔

اس بیان کے مطابق حماس کے اس سیل سے وابستہ ارکان مغربی کنارے کے شمالی قصبے قلقلیہ سے تعلق رکھتے ہیں اور وہ نابلس میں ایک فلیٹ کو ''دھماکا خیز مواد'' کی تیاری کے لیے لیبارٹری کے طور پر استعمال کررہے تھے۔

شین بیت نے دعویٰ کیا ہے کہ تفتیش کے دوران گرفتار چھے مشتبہ افراد نے اعتراف کیا ہے کہ انھیں اردن میں حماس کے عناصر نے بھرتی کیا تھا اور وہاں سے غزہ میں تربیت کے لیے بھیجا تھا۔اس کے بعد وہ مغربی کنارے کے علاقے میں واپس آگئے اور عسکری سرگرمیوں اور دوسروں کو بھرتی کرنے کی سرگرمیوں میں شریک ہو گئے تھے۔

اسرائیلی خفیہ ایجنسی نے کہا ہے کہ حماس کی بیرون ملک مقیم قیادت لوگوں کو ترغیب وتحریک دلانے کی صلاحیتوں کو بروئے کارلا کر عسکری یونٹ تیار کررہی ہے اور وہ اسرائیل پر حملے کر سکتے ہیں لیکن اس نے ان گرفتار افراد سے متعلق مزید تفصیل نہیں بتائی کہ وہ اسرائیل میں کس جگہ اور کب حملوں کی منصوبہ بندی کررہے تھے۔