"اسرائیل فنڈز جاری کرے ورنہ عالمی عدالت جائیں گے"

فلسطینی قومی حکومت کے سربراہ رامی الحمد اللہ کی اسرائیل کو دھمکی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size

فلسطینی قومی حکومت کے سربراہ رامی الحمد اللہ نے کہا ہےکہ اسرائیل کی جانب سے فلسطینی اتھارٹی کے محصولات ادا نہ کیے گئے تو ہم اپنے حق کے حصول کے لیے عالمی عدالت انصاف میں جائیں گے۔

وزیر اعظم الحمد اللہ نے ان خیالات کا اظہار رام اللہ میں انسداد بدعنوانی ورکشاپ سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ فلسطینی حکومت نے اسرائیل کو چار بار احتجاجی مراسلے بھیجے ہیں جن میں تل ابیب کی جانب سے غیر قانونی طور پر فلسطینی اتھارٹی کے روکے گئے محصولات پر احتجاج کیا گیا لیکن ہمیں کسی ایک مکتوب کا بھی جواب نہیں ملا۔ ہم زیادہ عرصے تک اسرائیل کی طرف سے جواب کا انتظار نہیں کریں گے۔ اگر ہمارے ٹیکسوں کی جمع کردہ رقوم اور دیگر واجبات ادا نہیں کیے جاتے ہیں تو ہمارے پاس عالمی عدالت انصاف سے رجوع کرنے کے سوا اور کوئی راستہ باقی نہیں رہتا۔

رامی الحمد اللہ نے دعویٰ کیا ہے کہ اسرائیل نے ان کے ایک ارب 50 ملین شیکل ٹیکس محصولات روک رکھے ہیں۔ گذشتہ جعمہ کو اسرائیل کی جانب سے صرف 1.34 ملین شیکل کی حقیر رقم ادا کی گئی ہے۔ فلسطینی اتھارٹی کے سربراہ محمود عباس نے یہ رقم بھی مسترد کردی تھی۔

انہوں نے بتایا کہ اسرائیل کی جانب سے ادا کیے گئے چند ملین شیکل ہم نے واپس کر دیے ہیں۔ ہمیں اچھی طرح معلوم ہے کہ اسرائیل فلسطینی اتھارٹی کو مالی طورپر کمزور کرنے کے لیے ہماری رقوم دبائے ہوئے ہے۔ فلسطینی وزیر اعظم نے اسرائیل کی جانب سے فنڈز روکنے کو عالمی قوانین کی کھلی خلاف ورزی قرار دیا۔

مقبول خبریں اہم خبریں