.

شام: بارود فیکٹری میں دھماکا،داعش کے 25 جنگجو ہلاک

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

شام کے مشرقی صوبے دیرالزور میں سخت گیر جنگجو گروپ دولت اسلامی عراق وشام (داعش ) کے زیر انتظام بارود تیار کرنے والے ایک پلانٹ میں زوردار دھماکا ہوا ہے جس کے نتیجے میں پچیس جنگجو ہلاک ہوگئے ہیں۔

برطانیہ میں قائم شامی آبزرویٹری برائے انسانی حقوق نے اس بم دھماکے کی اطلاع دی ہے لیکن اس کا کہنا ہے کہ فوری طور پر یہ واضح نہیں ہوسکا کہ یہ دھماکا حادثاتی طور پر ہوا ہے یا کسی میزائل حملے کا نتیجہ ہے۔

آبزرویٹری کی اطلاع کے مطابق بدھ کی شب دیرالزور کے قصبے آل مئادین میں بارود کی ایک فیکٹری میں زوردار دھماکا ہوا تھا اور اس کے بعد متعدد چھوٹے بم دھماکے ہوئے تھے جس سے پورا قصبہ ہی لرز اٹھا۔ان دھماکوں میں داعش کے پچیس جنگجو مارے گئے ہیں اور بیس زخمی ہوگئے ہیں۔

صوبہ دیرالزور کی سرحد عراق کے ساتھ ملتی ہے۔داعش کے جنگجوؤں نے گذشتہ سال جون سے اس صوبے کے بیشتر حصے پر قبضہ کرکے وہاں اپنی حکومت قائم کررکھی ہے۔تاہم صوبائی دارالحکومت دیرالزور کے بعض حصوں اور صوبے کے تزویراتی اور جغرافیائی لحاظ سے بعض غیر اہم علاقوں پر شامی فوج کا کنٹرول برقرار ہے۔