.

شام: داعش نے تدمر کے قریب 23 شامیوں کو قتل کر ڈالا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

انتہاپسند تنظیم دولت اسلامیہ عراق وشام 'داعش' سے تعلق رکھنے والے جنگجوئوں نے شام کے قدیم شہر تدمر کے قریب نو بچوں سمیت 23 شامی شہریوں کو قتل کردیا۔

شام مین انسانی حقوق پر نظر رکھنے والی تنظیم 'شامی آبزرویٹری' کے سربراہ رامی عبدالرحمان کے مطابق "دولت اسلامیہ نے تدمر کے شمال میں واقع گائوں عامریہ میں نو بچوں سمیت 23 شہریوں کو گولیوں کا نشانہ بنا کر قتل کر ڈالا۔"

رامی عبدالرحمان نے عالمی خبررساں ایجنسی اے ایف پی کو بتایا کہ داعش کی جانب سے عالمی ثقافتی ورثے کی جانب پیش قدمی کے دوران قتل ہونے والے ان افراد میں حکومتی ملازمین کے عزیز و اقارب شامل ہیں۔ تدمر کی عمارات قدیم دنیا کی سب سے اہم ثقافتی مقامات میں سے ایک ہیں جو کہ اپنے انوکھے یونانی اور فارسی امتزاج کی وجہ سے پہچانے جاتے ہیں۔

اس سے پہلے جمعرات کے روز بھی آبزرویٹری نے مطلع کیا تھا کہ داعشی جنگجوئوں نے 26 شامی شہریوں کو تدمر کی جانب پیش قدمی کے دوران قتل کر دیا تھا۔