.

شبوہ کی لڑائی میں 22 حوثی باغی ہلاک

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

یمن کے مختلف محاذوں پر مسلح جھڑپوں کا دائرہ وسیع ہونے کے بعد زمینی لڑائی میں آنے والی تیزی کے نتیجے میں حوثی ملیشیا کے 22 جنگجووں کی ہلاکت کی اطلاعات موصول ہوئی ہیں۔

شبوہ گورنری کے مرکزی شہر عتق کے گرد ونواح میں پرتشدد جھڑپیں جاری ہیں، جن میں دسیوں افراد کے ہلاک وزخمی ہونے کی اطلاعات ہیں۔

قبائل کی حمایت یافتہ عوامی مزاحمتی کمیٹیاں علاقے کا کنڑول دوبارہ حاصل کرنے کی کوشش میں مصروف ہیں جبکہ دوسری جانب عتق کے علاقے میں حوثیوں کی تازہ دم ملیشیا کی آمد کی بھی اطلاعات ہیں۔

مقامی ذرائع کے مطابق مزاحمت کاروں نے حوثی ملیشیا کو بھاری نقصان پہنچایا ہے۔ کہا جا رہا ہے کہ مزاحمت کاروں نے حوثی ملیشیا کو ان ٹھکانوں سے بیدخل کر دیا ہے جن کی جانب باغی جنگجووں نے حال ہی میں پیش قدمی کی۔

تعز گورنری میں بھی عوامی مزاحمت کاروں اور حوثی ملیشیا کے درمیان شہر کے مختلف علاقوں میں پرتشدد جھڑپیں ہو رہی ہیں۔ ان جھڑپوں میں سب سے زیادہ سخت محاذ اہم فوجی ٹھکانہ جبل العروس ہے جہاں عوامی مزاحمت کار حوثی ملیشیا کی پیش قدمی روکنے میں مصروف ہیں۔ اس محاذ پر بھی دسیوں افراد کے ہلاک وزخمی ہونے کی اطلاعات ہیں۔

اسی سلسلے میں حوثی ملیشیا کے جنگجو عوامی مزاحمت کاروں کی جانب سے لگائی جانے والی ایک گھات کارروائی کا نشانہ بنے ہیں۔ یہ جنگجو تعز میں فوجی امداد لیکر آ رہے تھے۔

ادھر جنوبی شہر عدن میں جھڑپوں کا سلسلہ جاری ہے۔ جنوبی یمن کے عوامی مزاحمت کاروں نے حوثی اور سابق معزول صدر کے حامیوں کا شدید حملہ پسپا کیا ہے۔ باغی ملیشیا کے ارکان کی کوشش تھی کہ وہ دار سعد، الصولبان اور الممدارہ میں اپنے قدم جما لیں۔

میدان جنگ سے موصولہ اطلاعات کے مطابق ہلال احمر این جی او کا ایک کارکن اس وقت حوثی ملیشیا کے فائر کی زد میں زخمی ہو گیا جب وہ مارب کے علاقے صرواح میں متحارب فریقوں کے ہلاک و زخمی ہونے والے افراد کو محاذ سے باہر نکالنے میں مصروف تھے۔

سعودی اتحاد کی بمباری شروع

فضائی محاذ پر اتحادی فوج نے دارلحکومت صنعاء کے السواد فوجی کیمپ سمیت جبل النھدین، تلال الریان اور فج عطان کے علاقوں پر اپنے فضائی حملے ہفتے کے روز بھی جاری رکھے۔

اس سے پہلے بھی اتحادی فوج کے لڑاکا طیاروں نے ارحب کے علاقے میں واقع حوثیوں کے صرف فوجی کیمپ میں گولا بارود کے ڈپو اور الجراف میں حوثی کالونیوں کے علاوہ سپریم ملڑی اکیڈیمی پر شدید بمباری کی، اسے یمن میں شروع کی جانے والی کارروائی کے بعد سب سے زیادہ شدید بمباری قرار دیا جا رہا ہے۔

اتحادی فوج کے فضائی حملے صعدہ، صرواح میں جاری رہے۔ نیز لڑاکا طیاروں نے صنعاء کے مشرقی علاقے مارب اور مغربی یمن کے علاقے حجہ میں حرض کو بھی بمباری کا نشانہ بنایا۔