.

لبنانی قصبے پر النصرہ فرنٹ کا حملہ، متعدد حزب اللہ جنگجو ہلاک

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

لبنان کی شام سے متصل سرحد کے قریب واقع جرود عرسال قصبے میں شدت پسند تنظیم النصرہ فرنٹ کی جانب سے ایک تازہ حملے میں لبنانی شیعہ ملیشیا حزب اللہ کے ایک اہم کمانڈر سمیت کئی جنگجو ہلاک اور زخمی ہوگئے ہیں۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق جمعرات کے روز شام کی سرحد کے قریب جرود عرسال قصبے میں وادی الرھوہ کے مقام پرحزب اللہ اور النصرہ فرنٹ کے جنگجوئوں کے درمیان خون ریز تصادم ہوا۔ بعد ازاں النصرہ فرنٹ کے جنگجو وادی الخیل کی طرف پسپا پوگئے جہاں لبنانی فوج کے ساتھ بھی ان کی جھڑپیں ہوئی ہیں۔

جرود عرسال میں النصرہ فرنٹ کے حملے میں احمد حرب نامی کمانڈر سمیت حزب اللہ کے کم سے کم پانچ جنگجو مارے گئے ہیں۔

دوسری جانب النصرہ فرنٹ نے جرود رعرسال میں وادی الرھوہ کے مقام پر حزب اللہ کے کمپائونڈ پرحملے کی ذمہ داری قبول کرتے ہوئے تنظیم کے 12 جنگجوئوں کو ہلاک کرنے کا دعویٰ کیا ہے۔

”ٹویٹر" پر پوسٹ ایک بیان میں النصرہ فرنٹ کا کہنا ہے کہ اس کے جنگجوئوں نے وادی الرھوہ میں حزب اللہ کے ایک مرکز کو "کونکورس" راکٹ سے نشانہ بنایا گیا جس کے نتیجے میں ایک درجن جنگجو ہلاک ہوگئے۔

حملے سے قبل حزب اللہ جنگجوئوں کی ایک فوٹیج بھی سامنے آئی ہے جس میں انہیں وادی الرھوہ میں ایک بلند مقام پر دکھایا گیا ہے۔ اسی دوران ایک راکٹ گرتا ہے جس میں متعددجنگجو ہلاک اور زخمی ہوجاتے ہیں۔

قبل ازیں منگل کو لبنان کی سرحد سے متصل شامی قصبے القلمون میں باغیوں کے حملے میں ایک ایرانی عہدیدار عقیل بختیاری کے مارے جانے کی تصدیق کی گئی تھی۔ بختیاری ایرانی پاسداران انقلاب میں ایک اہم عہدے پر تعینات تھے۔