.

ادلب : شامی فوج کے فضائی حملے ،60 افراد ہلاک

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

شام کے شمال مغربی صوبے ادلب میں ایک قصبے پر اسدی فوج کے فضائی حملوں میں بچوں سمیت کم سے کم افراد ہلاک اور متعدد زخمی ہوگئے ہیں۔

برطانیہ میں قائم شامی آبزرویٹری برائے انسانی حقوق نے اطلاع دی ہے کہ شامی فوج نے صوبہ ادلب کے مغرب میں واقع قصبے الجانوديہ میں ایک چوک پر بمباری کی ہے۔اس قصبے پر باغی جنگجوؤں نے قبضہ کر لیا ہے اور سرکاری فوج کو نکال باہر کیا ہے۔

آبزرویٹری نے مزید بتایا ہے کہ بمباری سے دسیوں افراد زخمی ہوئے ہیں اور ان میں سے بعض کی حالت نازک ہے۔واضح رہے کہ شام میں القاعدہ کی شاخ النصرۃ محاذ کی قیادت میں اسلامی باغی گروپوں پر مشتمل اتحاد جیش الفتح نے حال ہی میں صوبہ ادلب کے بیشتر شہروں اور قصبوں پر قبضہ کرلیا ہے۔

الجانوديہ صوبے کے دوسرے بڑے شہر جسر الشغور کے شمال میں واقع ہے۔اس شہر پر جیش الفتح نے 25 اپریل کو قبضہ کر لیا تھا۔اس سے پہلے انھوں نے مارچ میں صوبائی دارالحکومت ادلب پر قبضہ کر لیا تھا اور اس وقت صوبے کا بہت تھوڑا علاقہ شامی حکومت کے کنٹرول میں رہ گیا ہے۔