.

فلسطینی لڑکے قتل کی اسرائیلی تحقیقات کا بھانڈہ پھوٹ گیا

ویڈیو میں صہیونی فوجیوں کی درندگی سامنے آگئی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

حال ہی میں سامنے آنے والی ایک ویڈیو فوٹیج میں اسرائیلی فوجیوں کے ہاتھوں ڈیڑھ سال قبل شہید کیے گئے چودہ سالہ فلسطینی لڑکے یوسف الشوامرہ کے قتل سے متعلق اسرائیلی فوج کی تحقیقات کے جھوٹ کا پول کھل گیا ہے۔

العربیہ ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق ویڈیو فوٹیج میں دکھایا گیا ہے کہ ایک اسرائیلی فوجی اہلکار دو نہتے فلسطینی بچوں کو گولیاں مار رہا ہے۔ وڈیو فوٹیج میں شہید ہونے والے یوسف الشوامرہ کی شناخت ہو رہی ہے۔ دونوں فلسطینی بچوں کو اس وقت گولیاں ماری گئی تھیں سڑک پر جا رہے ہیں۔

اسرائیلی عدالت نے پچھلے سال اس کیس کی کچھ ایام تک سماعت کے بعد مقدمہ ختم کردیا تھا۔ اہم اسرائیل کی انسانی حقوق کی تنظیم "بتسلیم" نے عدالتی فیصلہ مسترد کرتے ہوئے کہا تھا کہ وہ فلسطینی لڑکے کے قتل سے متعلق مزید تصاویر اور ویڈیو ثبوت بھی فراہم کرنے کو تیار ہے۔ تاہم عدالت نے حسب روایت فوجیوں کو بری کردیا تھا۔