.

دہشت گردی کے خلاف جنگ میں مصر کا ساتھ دیں گے: ریاض

سعودی فرمانروا شاہ سلمان کا صدر السیسی کے نام خصوصی پیغام

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سعودی عرب کے فرمانروا شاہ سلمان بن عبدالعزیز نے برادر عرب ملک مصرمیں دو روز قبل فوج پر ہونے والے حملوں اور دہشت گردی کے دیگر واقعات کی شدید مذمت کرتے ہوئے کہا ہے کہ مشکل کی اس گھڑی میں ریاض قاہرہ کے ساتھ ہے۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق شاہ سلمان بن عبدالعزیز کی جانب سے مصر کے صدر ریٹائرڈ فیلڈ مارشل عبدالفتاح السیسی کے نام بھیجے گئے ایک برقیے میں جزیرہ سینا میں فوج پر ہونے والے دہشت گردانہ حملوں کی شدید الفاظ میں مذمت کرتے ہوئے مصری عوام اور حکومت کے ساتھ مکمل یکجہتی کا اظہار کیا گیا۔

شاہ سلمان کی جانب سے مصری صدر کو بھیجے گئے پیغام میں کہا گیا ہے کہ "ہمیں برادر اور پیارے ملک مصر میں دہشت گردوں کے فوج پر حملوں کا سن کربہت رنج ہوا ہے۔ دہشت گردی کی کارروائیوں میں فوج کی اور شہریوں کی صفوں میں ہونے والے جانی نقصان پر گہرا دکھ ہے۔ ہم ان حملوں کو مجرمانہ کارروائیاں قرار دیتے ہوئے ان کی شدید الفاظ میں مذمت کرتے ہیں۔ مشکل کی اس گھڑی میں سعودی حکومت اورپوری قوم مصری عوام کے ساتھ ہے اور دہشت گردی کو اسلام کے خلاف سنگین جرم قرار دیتی ہے"۔

بیان میں شاہ سلمان بن عبدالعزیز کی جانب سے مصر کے ساتھ غیر متزلزل تعاون جاری رکھنے کے عزم کا اعادہ کیا گیا ہے اور کہا گیا ہے کہ مصر کی قومی سلامتی کو یقینی بنانے اور دہشت گردی کو شکست دینے کے لیے سعودی عرب ہر ممکن مدد کرے گا۔

سعودی عرب کے ولی عہد اور وزیر داخلہ شہزادہ محمد بن نائف نے بھی مصری صدر کے نام اپنے ایک تعزیتی پیغام میں فوج پر جزیرہ سینا میں ہونے والے حملے کی شدید مذمت کی گئی ہے۔

خیال رہے کہ دو روز قبل مصر کے شورش زدہ علاقے جزیرہ نما سینا میں عسکریت پسندوں نے فوجی چوکیوں پر حملہ کرکے درجنوں مصری فوجی ہلاک اور زخمی کر دیے تھے۔ فوج نے جوابی کارروائی کرکے ایک سو سے زائد شدت پسندوں کو ہلاک کرنے کا دعویٰ کیا ہے۔