.

اسرائیلی طیارے کا شام نواز فلسطینی گروپ کے اڈے پر حملہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

اسرائیل کے ایک لڑاکا طیارے نے شام اور لبنان کی سرحد پر واقع ایک فوجی اڈے پر بمباری کی ہے جس کے نتیجے میں چھے افراد زخمی ہوگئے ہیں۔یہ فوجی اڈا شامی حکومت کی حامی ایک فلسطینی تنظیم کے کنٹرول میں ہے۔

شام کے سرکاری ٹیلی ویژن نے ایک نیوز فلیش میں اطلاع دی ہے کہ اسرائیلی طیارے نے مقامی وقت کے مطابق بدھ کی سہ پہر سوا تین بجے دمشق سے تعلق رکھنے والے پاپولر فرنٹ برائے فلسطینی لبریشن جنرل کمانڈ کے ایک ٹھکانے پر حملہ کیا ہے۔ یہ فلسطینی دھڑا شامی صدر بشارالاسد کا حامی ہے۔

مقبوضہ بیت المقدس میں اسرائیلی فوج کی خاتون ترجمان نے اس حملے کے حوالے سے کچھ کہنے سے گریز کیا ہے۔فلسطینی گروپ پر اس فضائی حملے سے قبل شام کے صوبے القنیطرہ کے ایک سرحدی گاؤں میں اسرائیل کے بغیر پائیلٹ جاسوس طیارے نے ایک کار پر میزائل داغے تھے۔اس حملے میں لبنان کی شیعہ ملیشیا حزب اللہ کے دو جنگجو ہلاک ہوگئے تھے۔

تاہم بعد میں ان دونوں مقتولین کی شناخت شامی صدر بشارالاسد کی حامی ملیشیا نیشنل ڈیفنس فورسز کے ارکان کے طور پر کی گئی ہے۔اس ملیشیا کے ارکان اپنے آبائی علاقوں میں سرکاری فوج کے شانہ بشانہ باغی جنگجوؤں کے خلاف لڑرہے ہیں۔