.

مصری صدر کی والدہ کے انتقال پرسرکاری منصوبوں کے لیے مدد کی اپیل

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

مصری صدر عبدالفتاح السیسی نے اپنی والدہ کے انتقال پراپنے ہم وطنوں سے کہا ہے کہ وہ ان کے لیے تعزیتی اشتہارات شائع کریں اور نہ اجتماعات منعقد کریں بلکہ وہ یہ رقم عوامی بھلائی کے منصوبوں کے لیے عطیہ کردیں۔

انھوں نے ایک بیان میں شہریوں سے کہا ہے کہ اخبارات میں تعزیتی نوٹسز اور خصوصی تعزیتی ایڈیشن شائع کرنے کے بجائے یہ رقم ایک سرکاری فنڈ میں عطیہ کردیں۔صدر السیسی نے حال ہی میں ملکی معیشت کی بحالی کے لیے منصوبوں کو رقوم مہیا کرنے کی غرض سے یہ فنڈ قائم کیا ہے۔

مصری صدر کی جانب سے جاری کردہ بیان میں یہ نہیں بتایا گیا ہے کہ ان کی والدہ سواد ابراہیم کی وفات کے وقت عمر کتنی تھی اور ان کا کیسے انتقال ہوا ہے۔ساٹھ سالہ عبدالفتاح السیسی اکثر اپنے انٹرویوز میں ان کا تذکرہ کرتے رہے ہیں اور ان کا کہنا ہے کہ والدہ ہی نے انھیں ''غیر جانبداری'' سیکھائی تھی۔

انھوں نے حال ہی میں مصریوں کو یہ اطلاع دی تھی کہ ان کی والدہ کی طبیعت ٹھیک نہیں ہے۔انھوں نے اپنے ایک انٹرویو میں یہ بھی کہا تھا کہ فوجی سربراہ کی حیثیت سے 3 جولائی 2013ء کو ملک کے پہلے منتخب صدر ڈاکٹر محمد مرسی کو برطرف کرنے کے بعد سب سے پہلے وہ اپنی والدہ ہی سے ملے تھے۔