مصری فورسز کی کارروائی میں غلطی سے میکسکو کے سیاح ہلاک

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

مصر کی سکیورٹی فورسز نے ملک کے مغربی صحرا میں غلطی سے میکسیکو سے تعلق رکھنے والے سیاحوں سمیت بارہ افراد کو ہلاک کردیا ہے۔

مصری فوج اور پولیس چٹانوں اور غاروں پر مشتمل اس وسیع وعریض پہاڑی علاقے میں مشتبہ جنگجوؤں کے خلاف اتوار کو کارروائی کررہی تھی۔انھوں نے مغربی صحرا کے علاقے وہات میں اس دوران سیاحوں کی چار گاڑیوں کا بھی پیچھا کیا اور ان میں سوار افراد کو غلطی سے دہشت گرد سمجھ کر فائرنگ کردی۔

مصر کی وزارت داخلہ کے بیان کے مطابق واقعے میں میکسیکو اور مصر سے تعلق رکھنے والے بارہ افراد مارے گئے ہیں اور دس زخمی ہوئے ہیں۔بیان میں کہا گیا ہے کہ وہ جس علاقے میں سفر کررہے تھے،وہاں غیرملکیوں کے داخلے پر پابندی تھی۔

مصری حکام نے یہ نہیں بتایا ہے کہ مرنے والوں میں کتنے مصری اور کتنے میکسیکو کے سیاح ہیں۔ادھر میکسیکو کی وزارت خارجہ نے اطلاع دی ہے کہ اس واقعے میں دو میکسیکن سیاح مارے گئے ہیں اور پانچ زخمی ہوئے ہیں۔وہ اس وقت قاہرہ ایک اسپتال میں زیر علاج ہیں جہاں ان کی حالت بہتر بتائی جاتی ہے۔

میکسیکو کے صدر ایریق پینا نائٹو نے سیاحوں کے قافلے پر حملے کی مذمت کی ہے اور مصری حکومت سے اس واقعے کی تحقیقات کا مطالبہ کیا ہے۔

جزیرہ نما سیناء میں برسرپیکار سخت گیر جنگجو گروپ داعش نے ایک بیان میں کہا تھا کہ اس نے اتوار کو مغربی صحرا میں ایک فوجی آپریشن کی مزاحمت کی ہے۔مصری فورسز گذشتہ سال سے اس علاقے میں جنگجوؤں کے خلاف بڑی کارروائی کررہی ہے لیکن وہ اب تک ان کی شورش پر قابو پانے میں کامیاب نہیں ہوسکی ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں