داعش: موصل میں داڑھی منڈوانے پر پھانسی کی سزاء

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

#شام اور #عراق کے شہروں پر اپنی خود ساختہ خلافت کی دعوے دار شدت پسند تنظیم دولت اسلامی #داعش نے سخت گیر اسلامی قوانین کے نفاذ میں مبالغہ آرائی پرمبنی سزائیں دینا شروع کی ہیں۔ حال ہی میں ایک رپورٹ میں انکشاف ہوا ہے کہ عراق کے شمالی شہر #موصل میں داعش نے 'فیشن' کے طور پر داڑھی شیو کرانے یا چھوٹی داڑھے رکھنے پر کوڑوں کی سزا کو سزائے موت میں تبدیل کردیا ہے۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق موصل میں داعش کی جانب سے شہریوں میں تقسیم کے گئے پمفلٹس میں کہا گیا ہے کہ کوئی شخص داڑھی شیو نہیں کراسکتا اور نہ ہی داڑھی کو چھوٹی کر سکتا ہے۔ ایسا کرنے والے شخص کو "استرے" سے ذبح کردیا جائے گا۔

روسی خبر رساں ایجنسی" سبوتنیک" کی جانب سے جاری کردہ رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ داعش نے موصل میں داڑھی منڈوانے پر کوڑے مارنے کی سزا مقرر کی تھی مگر اب اسے تبدیل کرتے ہوئے داڑھی شیو کرانے پر سزائے موت دینے کا اعلان کیا گیا ہے۔

"نینویٰ میڈیا نیٹ ورک" کے چیئرمین رافت الزراری نے "سبوتنیک" نیوز ایجنسی کو بتایا کہ موصل میں داعش نے داڑھی سے متعلق نئے قوانین کا نفاذ کیا ہے۔ نئے قانون کے تحت داڑھی شیو کرانے یا چھوٹی داڑھی رکھنے پر سزائے موت مقرر کی ہے۔ داعش کی جانب سے تمام شہریوں سے کہا گیا ہے کہ وہ داڑھی کے معاملے میں "داعش" کے باریش جنگجوئوں کی اقتداء کریں۔ جس طرح ان کی داڑھیاں سینے تک پہنچ رہی ہیں۔ ہر شہری کی داڑھی اسی طرح لمبی ہونی لازمی ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں