.

غربِ اردن:اسرائیلی فوجیوں کی فائرنگ سے فلسطینی لڑکا شہید

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

اسرائیلی فوجیوں نے غربِ اردن کے شہر بیت لحم کے نزدیک ایک فلسطینی لڑکے کو گولی مار کر شہید کردیا ہے جبکہ مقبوضہ مشرقی بیت المقدس میں فلسطینیوں اور قابض فورسز کے درمیان جھڑپوں کی اطلاعات ملی ہیں۔

العربیہ نیوز چینل کی رپورٹ کے مطابق اسرائیلی فوجیوں نے بیت لحم کے نزدیک واقع ایک مہاجرکیمپ میں جھڑپوں کے دوران تیرہ سالہ لڑکے عبدالرحمان عبداللہ کو گولی مار کرشہید کیا ہے۔گذشتہ چوبیس گھنٹوں میں اسرائیلی فوجیوں کی فائرنگ سے یہ دوسرے فلسطینی کی شہادت ہے۔

اس سے پہلے اتوار کی شب غرب اردن کے قصبے تلکرم میں اسرائیلی فوجیوں نے احتجاج کرنے والے فلسطینیوں پر فائرنگ کردی تھی جس سے ایک اٹھارہ سالہ لڑکا شہید ہوگیا تھا۔

مقبوضہ مشرقی بیت المقدس میں چاقو گھونپنے کے حالیہ واقعات میں چار یہودیوں کی ہلاکت کے بعد سے غربِ اردن شہروں اور قصبوں میں کشیدگی پائی جارہی ہے اور اسرائیلی فوجیوں کے علاوہ یہودی آبادکاروں نے بھی فلسطینیوں کو تشدد بنایا ہے۔انتہا پسند صہیونی وزیراعظم بنجمن نیتن یاہو نے چاقو گھونپنے کے واقعات کے بعد فلسطینیوں کے خلاف تادمِ مرگ جنگ کا عزم ظاہر کیا ہے۔انھوں نے اتوار کو اسرائیلی کابینہ کے اجلاس میں فلسطینیوں کے خلاف نئے سکیورٹی اقدامات کا اعلان کیا ہے۔