.

اسرائیلی خاتون فوجی پر حملہ کرنے والا فلسطینی شہید

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

مقبوضہ بیت المقدس میں ایک اسرائیلی خاتون فوجی اہلکار کو پیچ کس گھونپ کر زخمی کرنے والے فلسطینی شہری کو اسرائیلی پولیس نے گولی مار کر شہید کر دیا۔

القدس سے 'العربیہ' کے نامہ نگار نے اپنے مراسلے میں بتایا ہے کہ خاتون فوجی حملے میں معمولی زخمی ہوئی جبکہ پولیس نے جوابی کارروائی میں فلسطینی نوجوان کو براہ راست فائر کر کے شہید کر دیا۔

دو دنوں کے اندر القدس میں اسرائیلیوں کے خلاف کیا جانے والا یہ چھٹا حملہ تھا۔ اس سے قبل 'العربیہ' ہی کے نمائندہ خصوصی نے بتایا تھا کہ جمعرات کی دوپہر فلسطینی شہری کے ہاتھوں چھرا گھونپنے کی واردات میں یہودی آبادکار بری طرح زخمی ہوا۔

اسرائیلی حلقوں کی جانب سے بیان کردہ واقعہ کے مطابق پندرہ سالہ لڑکے نے لائٹ ریل کے ایک سیکیورٹی گارڈ سے پستول چھیننے کی کوشش کی، ناکامی پر اس نے چھری نکال لی اور یہودی آبادکار پر پل پڑا، تاہم موقع پر موجود افراد نے حملہ آور لڑکے کو پکڑ کر پولیس کے حوالے کر دیا۔

اسرائیلی پولیس کی خاتون ترجمان لوبا السمری نے ایک بیان میں دعوی کیا کہ "ایک مشتبہ عرب نے القدس میں متدین یہودی نوجوان کو چھرا گھونپنے کی کوشش کی، تاہم ناکامی پر اسے پولیس نے حراست میں لے لیا۔

حالیہ چند دنوں کے دوران القدس میں فلسطینیوں کی جانب سے اسرائیلی شہریوں اور آبادکاروں کو چھرا گھونپ کر زخمی کرنے کی وارداتوں میں بہت زیادہ اضافہ دیکھنے میں آیا ہے۔ یہ کارروائیاں مسجد اقصی میں نمازیوں کے خلاف اسرائیلی فوج کے کریک ڈاؤن کے بعد پیدا ہونے والی کشیدگی کا نتیجہ ہیں۔

بدھ کے روز بھی ایک اسرائیلی فوجی کو چھرا گھونپ کر زخمی کرنے کی ناکام کوشش کرنے والے فلسطینی کو قانون نافذ کرنے والے صہیونی اداروں نے گرفتار کر لیا تھا۔