.

مقبوضہ بیت المقدس: کار اور چاقو حملے میں ایک ہلاک

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

مقبوضہ بیت المقدس میں ایک کار ڈرائیور نے ایک بس اسٹاپ سے اپنے کار ٹکرا دی ہے اور اس کے بعد وہاں موجود لوگوں پر چاقو سے حملہ کیا ہے جس کے نتیجے میں ایک شخص ہلاک اور چار زخمی ہوگئے ہیں۔

اسرائیلی دارالحکومت تل ابیب کے شمال میں واقع علاقے میں ایک اور فلسطینی نے منگل کے روز مبینہ طور پر ایک راہ گیر کو چاقو گھونپ کر زخمی کردیا ہے۔علاقے میں موجود لوگوں نے اس کو تشدد کا نشانہ بنایا اور پھر پولیس کے حوالے کردیا ہے۔

اسرائیلی پولیس کا کہنا ہے کہ اس فلسطینی کی عمر بائیس سال ہے اور وہ مقبوضہ مشرقی بیت المقدس کا رہنے والا ہے۔علاقے کے مکینوں کے تشدد سے اس کو شدید زخم آئے ہیں اور اس کو اسپتال منتقل کردیا گیا ہے۔

مقبوضہ فلسطینی علاقوں میں یکم اکتوبر سے جاری تشدد کے واقعات میں چار اسرائیلی ہلاک اور چھبیس فلسطینی شہید ہوچکے ہیں۔ مقبوضہ بیت المقدس میں یہودیوں کی مسجد الاقصیٰ میں بلا روک ٹوک دراندازی کے خلاف فلسطینی سراپا احتجاج بنے ہوئے ہیں اور وہ مایوسی کے عالم میں یہودیوں پر چاقوؤں سے حملے کررہے ہیں جبکہ اسرائیلی فوجی اور پولیس اہلکار فلسطینیوں کو براہ راست گولیوں یا فضائی حملوں میں نشانہ بنا رہے ہیں۔قابض فورسز کی کارروائیوں میں شہید ہونے والوں میں آٹھ فلسطینی بچے بھی شامل ہیں۔

ادھر غزہ کی پٹی میں بھی فلسطینیوں اور اسرائیلی فورسز کے درمیان کشیدگی پائی جارہی ہے اور غزہ کے ساتھ سرحدی علاقے میں اسرائیلی فورسز کی کارروائیوں میں نو فلسطینی شہید ہوچکے ہیں۔

اسرائیلی فورسز کی جانب سے فلسطینی مظاہرین کے خلاف طاقت کے وحشیانہ استعمال کے خلاف آج غربِ اردن ،غزہ اور مقبوضہ مشرقی القدس میں ''یوم الغضب'' منایا جارہا ہے۔اسرائیل کی عرب کمیونٹی نے بھی اپنے شہروں اور قصبوں میں تجارتی ہڑتال کی اپیل کررکھی ہے۔