.

شہزادہ محمد بن سلمان نے قومی فٹبال ٹیم کو پابندیوں سے بچا لیا

فلسطین۔ سعودی عرب فٹبال میچ غرب اردن سے باہر منتقل کرنے کی تجویز

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

فلسطین کے علاقے مقبوضہ مغربی کنارے میں منعقد ہونے والے فٹبال مقابلوں میں حصہ نہ لینے کا اعلان کرنے کے بعد سعودی عرب کی فٹبال ٹیم کو عالمی فٹ بال فیڈریشن کی جانب سے پابندیوں کا سامنا کرنا پڑ سکتا تھا مگر سعودی عرب کے وزیردفاع اور نائب ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان نے فوری مداخلت کرکے قومی فٹبال ٹیم کو پابندیوں سے بچا لیا۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق شہزادہ محمد بن سلمان نے فلسطینی اور سعودی فٹبال ٹیموں کے درمیان میچ غرب اردن سے باہر کسی دوسرے مقام پر منتقل کرنے کی تجویز پیش کی جسے قبول کر لیا گیا ہے۔ انہوں نے فلسطینی اتھارٹی کے سربراہ محمود عباس سے ٹیلیفون پر بات کی اور کہا کہ دونوں ٹیموں کے درمیان میج متنازعہ علاقے کے بجائے کسی دوسرے مقام پر منتقل کیا جائے۔

گذشتہ روز یہ اطلاعات سامنے آئی تھیں کہ سعودی عرب کی فٹبال فیڈریشن نے فیفا کے شیڈول کے خلاف غرب اردن میں فٹبال مقابلوں میں حصہ نہ لینے کا اعلان کیا ہے۔

سعودی فٹبال فیڈریشن کا اصولی موقف ہے کہ فلسطینی اتھارٹی کے زیرانتظام غرب اردن درحقیقت اسرائیل کا مقبوضہ علاقہ ہے۔ سعودی عرب کی قومی ٹیم کا اس علاقے میں جانا اور وہاں پر کسی مقابلے میں حصہ لینا اسرائیل سے تعلقات کے قیام کے مترادف سمجھا جائے گا۔