.

ایران: سُنی عالم دین 11 طلبہ سمیت گرفتار

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

ایران میں پولیس نے مغربی صوبہ کردستان کے مہا باد شہر میں ایک کارروائی کے دوران اہل سنت مسلک کے سرکردہ عالم دین کو ان کے 11 طلبہ سمیت حراست میں لے لیا ہے۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ نے ایران میں انسانی حقوق کی صورت حال پر نظر رکھنے والے نیوز ویب پورٹل"ھرانا" کے حوالے سے بتایا ہے کہ پولیس اور انٹیلی جنس حکام نے بدھ کو ماموستا سید طہ کریمی کو مہا باد کے قصبےبلاغ سے گیارہ طلبہ سمیت حراست میں لے لیا۔ حراست میں لیے گئے طلبہ کی شناخت ظاہر نہیں کی گئی۔

ویب پورٹل کی رپورٹ کے مطابق عالم دین اور ان کے طلبہ کی گرفتاری کی وجوہ سامنے نہیں آ سکی ہیں اور نہ ہی ان کے ٹھکانے کا کوئی پتا چلا ہے۔ علامہ کریمی کو ماضی میں بھی ایرانی پولیس مسلک کی آڑ میں حراست میں لیتی رہی ہے۔

ماموستا طہ کریمی کو 2012ء میں حراست میں لیا گیا تھا۔ وہ 17 ماہ تک کرج شہر کے قریب رجائی شھر نامی جیل میں پابند سلاسل رہے۔

ایران میں سنی عالم دین اور ان کے طلبہ کی تازہ گرفتاری ایک ایسے وقت میں عمل میں لائی گئی ہے جب سنی مسلک کے ایک نوجوان عالم دین کو سنائی گئی سزائے موت پرعمل درآمد کی تیاریاں جاری ہیں۔